پاکستان کا ایٹمی پروگرام کسی بھی ملک کیلئے خطرہ نہیں ہے: سابق وزیراعظم

12

لندن: پاکستان مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف نے ایٹمی پروگرام سے متعلق امریکی صدر جو بائیڈن کے بیان پر ردعمل دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان کا ایٹمی پروگرام کسی بھی ملک کیلئے خطرہ نہیں ہے ۔

 

قائد ن لیگ نے کہا ہے کہ پاکستان ایک ذمہ دار ایٹمی ریاست ہے ، جو بین الاقوامی اور قومی مفادات کا تحفظ کرنے کی مکمل صلاحیت رکھتا ہے ۔ انہوں نے مزید کہا کہ پاکستان اپنی خود مختاری ، ریاست اور علاقائی سالمیت کے تحفظ کا حق محفوظ رکھتا ہے ۔

 

اس سے قبل امریکی صدر جوبائیڈن کے پاکستان سے متعلق ریمارکس پر وزارت خارجہ نے شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ سمجھنا مشکل ہے صدر بائیڈن نے غیر ضروری بیان کس تناظر میں دیا ۔ کیونکہ پہلے متعدد امریکی صدور اور حکومتوں نے پاکستان کے ایٹمی پروگرام کو ہمیشہ معیاری قرار دیا ہے ۔

 

وفاقی وزیر توانائی خرم دستگیر نے امریکی صدر کے پاکستان سے متعلق شکوک و شبہات کو غلط قرار دے دیا ، کہتے ہیں جوبائیڈن کے بیانات بے بنیاد ہیں ۔

 

وفاقی وزیر نے اپنے بیان میں کہا کہ پاکستان کا جوہری کمانڈ اینڈ کنٹرول سسٹم بالکل محفوظ ہے اور عالمی تنظیمیں پاکستان کے ایٹمی پروگرام کی پروٹیکشن کی کئی بار تصدیق کرچکیں ہیں ۔

 

واضح رہے کہ ڈیموکریٹ کانگریشنل کمپین کمیٹی سے خطاب کرتے ہوئے امریکی صدر نے کہا تھا کہ پاکستان "دنیا کے خطرناک ترین ممالک میں سے ایک ہو سکتا ہے” کیونکہ اس ملک کے پاس "بغیر کسی ہم آہنگی کے جوہری ہتھیار” ہیں ۔

 

جو بائیڈن نے روس اور چین کا حوالہ دیتے ہوئے پاکستان پر بھی تنقید کی ، جو بائیڈن نے یہ بیان عالمی سطح پر بدلتی ہوئی جغرافیائی سیاسی صورتحال کے تناظر میں دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ دنیا تیزی سے بدل رہی ہے اور ممالک اپنے اتحاد پر نظر ثانی کر رہے ہیں ۔

 

انہوں نے مزید کہا کہ امریکہ کے پاس دنیا کو ایسی جگہ پر لے جانے کی صلاحیت ہے جو پہلے کبھی نہیں تھی ۔

 

 

 

تبصرے بند ہیں.