آزاد کشمیر میں دھاندلی ہوئی، نتائج مسترد ، چپ نہیں بیٹھیں گے: ن لیگ کا تحریک چلانے کا اعلان

199

اسلام آباد : پاکستان مسلم لیگ ن نے آزاد کشمیر کے الیکشن کے نتائج کو مسترد کرتے ہوئے دھاندلی کے خلاف اندرون و بیرون ملک احتجاجی تحریک چلانے کا اعلان کردیا۔

اسلام آباد میں مسلم لیگ ن آزاد کشمیر کے ٹکٹ ہولڈرز کا اجلاس ہوا جس میں تمام ٹکٹ ہولڈرز ، آزاد کشمیر کے وزیر اعظم راجہ فاروق حیدر، سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی، مسلم لیگ ن کے سیکرٹری جنرل احسن اقبال نے بھی شرکت کی۔

اجلاس کے اعلامیہ کے مطابق پاکستان مسلم لیگ ن پچیس جولائی کے انتخابی نتائج کو مسترد کرتی ہے  اور آزادکشمیر، پاکستان بھر اور بیرون ملک بھرپور احتجاجی تحریک اور ہر سطح پر بھرپور مزاحمت کی جائے گی۔

اعلامیہ میں کہا گیا ہے کہ   عمران خان نے ذاتی طورپر آزادکشمیر کے انتخابات میں مداخلت کی۔انتخابی نتائج کو وفاقی حکومت اور دیگر اداروں کی جانب سے کھلی مداخلت کی بنا پر مسترد کرتے ہیں ۔ جس جماعت نے پانچ لاکھ سے زائد ووٹ حاصل کیے اسے صرف 6 نشستیں ملیں  ۔ہمارے  اکثر عہدیداروں کو انتخابی انجینئرنگ کے ذریعے ہرایا گیا۔  کشمیریوں کی حق خودارادیت کی تحریک متاثر کی گئی ہے۔

اعلامیہ کے مطابق ان نتائج سے  قومی و بین الاقوامی طور پر مسئلہ کشمیرکمزور اور پاکستان کے موقف کو نقصان پہنچا ۔  کھلی دھاندلی کے خلاف پوری قوت سے تحریک چلائی جائیگی جو مرحلہ وار حلقہ جات پاکستان اور تارکین وطن کشمیریوں تک پھیلائی جائیگی اس دھاندلی کے خلاف عوام کے تعاون سے قومی /بین الاقوامی سطح پر جدوجہد جاری رکھے گی ۔

الیکشن کمیشن آزادکشمیر کی ناقص کارکردگی اور انتظامی کمزوری کی بھی بھرپور مذمت کی گئی۔ دھاندلی کے شواہد کو میڈیا کے سامنے لانے کے لیے فیکٹ فائنڈنگ کمیٹی تشکیل دی جائیگی۔

سابق وزیر اعظم شاہد خاقان عباسی نے خطاب کرتے کہا کہ  آزادکشمیر کے لوگوں کو خراج تحسین پیش کرتا ہوں جنہوں نے بدترین دھاندلی کا مقابلہ کیا۔   مسلم لیگ ن کی حکومت نے آزادکشمیر کے دیرینہ اور حل طلب مسائل کے حل کے لیے عملی اقدامات اٹھائے۔  ہمارا مینڈیٹ چوری کیا گیا ہے، چپ کسی صورت نہیں بیٹھیں گے آزادکشمیر کی قیادت کے ساتھ ملکر لائحہ عمل طے کرینگے۔ جن لوگوں نے جماعتی ڈسپلن کی خلاف ورزی کی انہیں کسی صورت واپس نہیں لیں گے۔

راجہ فاروق حیدر نے کہا کہ مسلم لیگ ن کی حکومت کا موازنہ 73 سال کی کسی بھی حکومت سے کر کہ دیکھ لیں ہم نے تاریخ ساز کامیابیاں حاصل کیں۔خزانہ آج بھرا ہوا ہے پارٹی ٹکٹ ہولڈرز کی مخالفت کرنے والوں پر جماعت کے دروازے بند کر دیے گئے ہیں۔   آزادکشمیر میں میرٹ کی بحالی، قانون کی حکمرانی اور عوامی ضروریات کو مد نظر رکھ کر ترقیاتی منصوبہ جات دینے کی روایت ہم نے ڈالی۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ  تمام امیدواران کو مبارکباد پیش کرتا ہوں جنہوں نے تمام تر دباؤ، دھونس دھاندلی کے باجود ڈٹ کر مقابلہ کیا۔  ملک ایک فیصلہ کن موڑ پر کھڑا ہے اور مسلم لیگ ن درست سمت میں ہے۔  ملک کی حالت بدلنی ہے تو اداروں کو اپنی حدود میں رہنا ہوگا۔

تبصرے بند ہیں.