وزیر اعظم کا مہنگائی کے ستائے عوام کو بڑا ریلیف دینے کا فیصلہ 

47

 

اسلام آباد: وزیرِ اعظم محمد شہباز شریف نے کہا ہے کہ غریب اور پسماندہ طبقہ کو بڑا ریلیف دینے کا فیصلہ کیا ہے، 5 بنیادی اشیاء ضروریہ کو اگلے مالی سال کیلئے کم نرخوں پر فراہم کرنے کا اصولی فیصلہ کیا گیا ہے، مذکورہ سبسڈی یوٹیلٹی سٹورز کے ذریعے پورے ملک میں غریب اور پسماندہ طبقے کو فراہم کی جائے گی ۔ یہ فیصلے وزیرِ اعظم شہباز شریف کی زیرِ صدارت یوٹیلٹی اسٹورز کے حوالے سے اعلی سطح کے اجلاس میں کئے گئے۔ اجلاس میں وفاقی وزراء مفتاح اسماعیل، مخدوم مرتضی محمود اور متعلقہ اعلیٰ افسران نے شرکت کی۔

 

اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ آٹے، چینی، گھی/خوردنی تیل، دالیں، اور چاول کی بازار سے کم نرخوں پر فراہمی یقینی بنائی جائے گی۔ وزیرِ اعظم نے کراچی میں یوٹیلٹی سٹورز کے نیٹ ورک میں تو سیع کی بھی منظوری دی۔ انہوں نے کہا کہ کراچی میں یوٹیلٹی سٹور کی کم تعداد کسی صورت منظور نہیں۔انہوں نے ہدایت کی کہ کراچی میں یوٹیلٹی سٹورز کی تعداد میں اضافہ کا جامع منصوبہ دو ہفتے میں پیش کیا جائے۔

 

وزیراعظم نے کہا کہ پسماندہ طبقے کو اس وقت ریلیف کی سب سے زیادہ ضرورت ہے، پسماندہ طبقے کے ریلیف کیلئے حکومت ہر قیمت خرچ کرنے کو تیار ہے، پسماندہ طبقے کو اشیاءِ ضروریہ پر ریلیف حکومت کی اولین ترجیح ہے۔ وزیراعظم نے سبسڈی کا نظام شفاف اور ڈیجیٹل بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ مختلف قسم کی سبسڈیاں اکٹھی کرکے ایک جامع نظام بنایا جائے اور خصوصی طور پر پسماندہ طبقے کو ریلیف کی فراہمی میں ترجیح دی جائے۔

 

وزیراعظم نےسبسڈی کے نظام میں اصلاحات کیلئے وفاقی وزیرِ خزانہ، وفاقی وزیرِ صنعت و پیداوار اور وفاقی وزیرِ تخفیفِ غربت کو تعاون سے حکمتِ عملی تشکیل دینے کی ہدایت کی۔ اجلاس کو یوٹیلٹی سٹورز پر دی جانے والی سبسڈی، پسماندہ طبقے کو ٹارگٹڈ سبسڈی، یوٹیلٹی سٹورز کی ملک بھر میں تعداد میں توسیع اور خیبرپختونخوا میں وزیرِ اعظم کے وژن کے تحت سستے آٹے کی فراہمی کے پروگرام پر پیشرفت سے تفصیلی طور پر آگاہ کیا گیا۔ اجلاس کو بتایا گیا کہ یوٹیلٹی سٹورز کارپوریشن ملک میں اس وقت 3822 سٹورز کو براہ راست اور 1380 فرنچائز چلا رہا ہے جبکہ 30جولائی تک بلوچستان، سندھ، کشمیر، گلگت بلتستان اور پنجاب میں 300 سے زیادہ نئے اسٹورز بنائے جائیں گے۔

 

اجلاس کو بتایا گیاکہ وزیرِ اعظم شہباز شریف کے ریلیف پیکیج کے تحت اب تک 11 کروڑ 30 لاکھ مستحق افراد مستفید ہو چکے ہیں جن کو فی کلو آٹے پر 60 روپے، چینی پر 21 روپے، گھی پر 250 روپے جبکہ دالوں اور چاول پر 15-20 روپے ٹارگٹڈ سبسڈی دی گئی ہے، سبسڈی کا طریقہ کار ڈیجیٹل ہے جبکہ نادرا اور وزارتِ تخفیفِ غربت کے ڈیٹا سے منسلک ہے۔ اجلاس کو مزید بتایا گیا کہ صوبہ خیبرپختونخوا میں 942 یوٹیلٹی سٹورز پر سستے آٹے کی فراہمی یقینی بنائی جا رہی ہے جبکہ وزیرِ اعظم شہباز شریف کی خصوصی ہدایت پر 1000 نئے سیل پوائنٹس اور 200 موبائل سٹورز کا اضافہ کیا جا رہا ہے۔

 

اجلاس کو بلوچستان کے حوالے سے بتایا گیا کہ وزیرِاعظم شہباز شریف کے رمضان میں دورے اور خصوصی ہدایات کے تحت بلوچستان میں اشیاءِ ضروریہ کی بازار سے بارعایت فراہمی کو یقینی بنایا جا رہا ہے جس کے لئے نہ صرف یوٹیلٹی سٹورز بلکہ موبائل سٹورز بھی قائم کئے گئے ہیں جن کی بدولت دور دراز علاقوں تک سبسڈی کی فراہمی یقینی بنائی جا رہی ہے۔ وزیرِاعظم نے صوبہ خیبر پختونخوا اور بلوچستان میں یوٹیلٹی اسٹورز کے اقدامات کو سراہا اور ڈیجیٹل نظام کے تحت ٹارگٹڈ سبسڈی کی فراہمی کی پذیرائی کی۔

تبصرے بند ہیں.