سپریم کورٹ میں صدر مملکت عارف علوی کوعہدے سے برطرف کرنے کی درخواست دائر

28

 

اسلام آباد:  عام انتخابات کی تاریخ نہ دینے پر صدر مملکت عارف علوی کو کام سے روکنے اور عہدے سے ہٹانے کے لئے سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی گئی۔

 

نجی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق  آئین کے آرٹیکل 184 کی شق 3 کے تحت غلام مرتضیٰ نے صدر مملکت کیخلاف درخواست دائر کی۔ دائر کردہ درخواست میں صدر اور وزارت قانون کو فریق بنایا گیا۔

 

تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ میں صدرعارف علوی کوکام سے روکنے اور عہدے سے ہٹانے کی دائر  درخواست میں موقف اپنایا گیا ہے کہ عام انتخابات کی تاریخ دینا صدر کا کام تھا لیکن انہوں نے تاریخ نہیں دی۔

 

درخواستگزار نے درخواست میں مؤقف اختیار کیا کہ صدرعارف علوی نےاپنے اختیارات کاغلط استعمال کیا، انہوں نے صدر مملکت کے عہدے کی تضحیک کی، صدر پوری قوم کا ہوتا ہے ناکہ صرف ایک سیاسی جماعت کا ہوتاہے، عارف علوی نے صدارتی دفترکو پی ٹی آئی کی سیاسی سرگرمیوں کیلئےوقف کر رکھا۔

 

 

درخواست گزار کا کہنا ہے کہ عارف علوی صدرکےعہدےکاغلط استعمال کرکےغیرآئینی اقدام کے بھی مرتکب ہوئے، صدر نے اپنے آئینی ذمہ داری سےبھی پہلوتہی برتی ہے، غیر قانونی طورپر اسمبلی کی تحلیل کے بھی مرتکب ہوئے ہیں اور انہوں نےآئین کے آرٹیکل 5 کے تحت آئین پر عملداری کویقینی نہیں بنایا۔

 

غلام مرتضیٰ نے  سپریم کورٹ میں دائر درخواست میں استدعا کی کہ عارف علوی کو بطور صدر کام کرنے سے روکا جائے اور صدر کے خلاف آئین قانون کی خلاف ورزی کرنے پرکارروائی عمل میں لائی جائے۔

تبصرے بند ہیں.