نواز الدین صدیقی اور اہلیہ نے طلاق کا فیصلہ واپس لے لیا

87

نیو دہلی: بھارتی فلم انڈسٹری کے نامور اداکار نواز الدین صدیقی اور ان کی اہلیہ نے اپنے بچوں کی خاطر طلاق کا فیصلہ واپس لے لیا ۔
بھارتی میڈیا کے مطابق نواز الدین صدیقی کی اہلیہ نے 2019 میں شوہر سے خلع لینے کیلئے عدالت سے رجوع کیا تھا ۔ اپنی درخواست میں انہوں نے بھارتی اداکار پر جاسوسی ، تشدد اور نان نفقہ کے اخراجات ادا نہ کرنے جیسے الزامات عائد کیے تھے ۔
تاہم اب دونوں کو اپنی غلطیوں کا احساس ہو گیا ہے اس لیے دونوں نے بچوں کی خوشی کیلئے طلاق کا فیصلہ واپس لے لیا ہے ۔
بھارتی میڈیا کے مطابق اس فیصلے کے بعد نواز الدین صدیقی اپنی بیوی اور بچوں کے ہمراہ یو اے ای جائیں گے جہاں اُن کے بچے اپنی تعلیم حاصل کریں گے ۔
اپنے بیان میں نواز الدین صدیقی کی اہلیہ نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ طلاق کا فیصلہ واپس لینے کے بعد وہ اپنے شوہر اور بچوں کے ساتھ دبئی جا رہی ہیں ۔
انہوں نے مزید بتایا کہ اُن کے بچے دبئی کے اسکول میں تعلیم حاصل کر رہے تھے لیکن کورونا کے باعث آن لائن کلاسز ہو رہی تھیں اس لیے وہ بھارت میں رہ کر آن لائن کلاسز میں شرکت کر رہے تھے لیکن اب حالات ٹھیک ہونے کے بعد بچے سکول جا کر کلاسز اٹینڈ کرنا چاہتے ہیں ۔
خیال رہے کہ 2010 میں دونوں کی شادی ہوئی تھی لیکن 2015 میں اُن کے درمیان اختلافات کی خبریں سامنے آنا شروع ہوئیں ۔ ان خبروں میں تیزی اُس وقت آئی جب عالیہ صدیقی نے خلع کیلئے عدالت سے رجوع کیا مگر اب دونوں نے ایک بار پھر ساتھ رہنے کا فیصلہ کر لیا ہے ۔

تبصرے بند ہیں.