براؤزنگ ٹیگ

Dr Azhar Waheed

حقیقت ِ غم

اسلام آباد سے شہباز مظفر لکھتے ہیں، عارفوں اور داناؤں نے غم کی بڑی فضیلت بیان کی ہے، حضرت واصف علی واصفؒ نے بھی لکھا ہے کہ اللہ کے محبوبوں کی خوراک غم ہے، اللہ جسے اپنے نزدیک کرنا چاہتا ہے اسے غم کی دولت دیتا ہے۔ سوال یہ ہے کہ غم تو دکھ…

اخلاقیات، ادب اور منافقت!

اِس قلم کار کے اکثر کالم اپنے قارئین کی کسی فکری اُلجھن کو سلجھانے کی غرض سے ہوتے ہیں۔ سوشل میڈیا پر ایسے سوالات سے بھی واسطہ پڑتا ہے جن کا تعلق ہمارے معاشرتی روابط کے ساتھ ہوتا ہے، لامحالہ اِن سوالات کے جوابات بھی اس فقیر پر واجب ٹھہرتے…

کہانی در کہانی

کہانی میں حکمت اور حقیقت تلاش کرنا صاحبان حکمت اور متلاشیانِ حقیقت کا کام ہے، اور حقیقت کو کہانیوں میں گم کر دینا یقیناً عاقبت نااندیشوں کا شیوہ ہے۔ جاہلوں نے احسن القصص کو اساطیر الاولین کہہ کر پسِ پشت ڈال دیا۔ ایسے لگتا ہے جیسے ہر جگہ ایک…

ہم شرمندہ ہیں!!

ہم اپنے بچوں سے شرمندہ ہیں۔ ہم شرمندہ ہیں‘ اپنے طالب علموں سے ، ہم شرمندہ ہیں اپنے سکول کالج اور یونیورسٹی کے بچوں سے ، ہم شرمندہ ہیں ‘ اپنے مدارس اور مساجد میں پڑھنے والے بچوں سے ، ہم شرمندہ ہیں‘ اپنی قوم سے ، ہم شرمندہ ہیں‘ اقوامِ عالم…

 توبہ…… اور کب تک!!

توبہ اس وقت تک جاری رہنی چاہیے جب تک قبول نہ ہو جائے۔ اہل اللہ نے توبہ قبول ہوجانے کی نشانی یہ بتائی ہے کہ جب توبہ قبول ہو جاتی ہے تو وہ گناہ دوبارہ سرزد نہیں ہوتا۔ مرشدی حضرت واصف علی واصف فرماتے ہیں کہ جب توبہ قبول ہو جاتی ہے تو یادِ گناہ…

توڑ کا جوڑ

مغربی طرزِ فکر اور طرز عمل نے ہماری بدنی زندگی کوبھاری بھرکم آسائشیں مہیا کی ہیں،وجودی فاصلے دم بھر میں طے ہو رہے ہیں،جسمانی آلام دُور کرنے کی ایک صنعت قائم ہے۔ وجودی لذات کی تکمیل کے لیے سہل ترین راستے تراش لیے گئے ہیں۔ مغربی تہذیب و…

زیاں اور احساسِ زیاں

زیاں یہ ہے کہ انسان روحانی قدروں کو کھو کر مادّی قدروں میں کھو جائے ……اور احساسِ زیاں یہ ہے کہ اسے تائب ہو کر لوٹ آنے کا احساس باقی رہے۔ انسان کی قدر‘ روحانی قدروں میں بسر کرنے میں ہے۔ روحانی قدروں میں بسر کرنے والا انسان ہی انسان کی صحیح…

آہستہ ہونا…… شائستہ ہونا ہے!

با ادب سے بے ادب ہونے میں پہلا فرق‘ آواز کا بلندہونا ہے۔ بے ادب وہ نہیں ہوتا‘جو ادب کرنا جانتا نہ ہو‘ بلکہ بے ادب وہ ہوتاہے جو ادب کرنا ترک کر دے۔ ہم میں سے ہر شخص جانتا ہے کہ گفتار میں آواز کا مدھم رکھنا آدابِ محفل میں بھی ہے اور آدابِ…

صبر اور شکر!!

صبر…… کسی مجبور کی بے کسی اوربے بسی کا نام نہیں‘ بلکہ ایک صاحبِ اختیار کے اپنے اختیار پر کا نام ہے۔ صبر ایک بہت بڑی قوت ہے…… اور یہ قوت‘ قوتِ ضبط ہے۔جب تک کسی ذی قوت کی معیت حاصل نہ ہو‘ صبر کی قوت حاصل نہیں ہوتی۔ صبر…… دعوتِ لذات و شہوات…

اقبالؒ کا تصورِ خودی!!

’’گمنام ادیبــ‘‘ کے نام سے حضرت واصف علی واصفؒ کا مجموعہ مکاتیب ترتیب دیا گیاہے، اس میں ایک خط بہت اہم ہے، ایک قاری نے حضرتِ اقبالؒ کے ایک شعر کی تشریح دریافت کی‘ تواس کے جواب میں آپؒ نے اسے تحریر کیا’’ اقبال کے شعر کی تشریح کرنے کے لئے…