ایران اسرائیل کشیدگی ، پاکستان نے مغربی سمت سے آنیوالی پروازوں کی نگرانی شروع کر دی

226

 

اسلام آباد: ایران کے اسرائیل پر جوابی حملے کے بعد پاکستان نے کسی بھی ممکنہ خطرے سے نمٹنے کے لیے اپنی فضائی حدود، خصوصاً مغربی سمت سے آنے والی پروازوں کی نگرانی شروع کردی ہے۔

 

سول ایوی ایشن اتھارٹی (سی اے اے) کے ذرائع  کے مطابق نئی صورتحال کے حوالے سے ایئر ٹریفک کنٹرول کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں اور  ملکی حدود میں داخل ہونے والی پروازوں کو ایئر ٹریفک کنٹرول سے لازمی اجازت لینا ہوگی۔

 

ذرائع کا کہنا تھا کہ افغانستان اور ایران کی سمت سے آنے والی ہر پرواز کی نگرانی کی جائے گی۔

 

واضح رہے کہ  ایران نے دمشق میں ایرانی قونصل خانے پر حملے کا جواب دیتے ہوئے ہفتے اور  اتوار کی درمیانی شب  اسرائیل پر 300 سے زائد ڈرون اور کروز میزائل سے حملہ کر دیا۔

 

ایران کے پاسداران انقلاب نےکہا ہے کہ اس نے درجنوں ڈرون اور میزائل لانچ کرکے سرائیلی دفاعی تنصیبات کو نشانہ بنایا، گولان کی پہاڑیوں اور شام کے قریب اسرائیلی فوجی ٹھکانوں کو بھی نشانہ بنایا گیا۔

 

ایرانی میڈیا کے مطابق ایران نے اسرائیل پر وسیع پیمانے پر ڈرون حملے کیے ہیں، دوسری جانب اسرائیلی ٹی وی نے دعویٰ کیا ہے کہ ایران نے 300 سے زائد ڈرون اور کروز میزائل فائر کیے ہیں۔

 

اسرائیلی فوجی ترجمان کے مطابق ایرانی ڈرونز سے جنوبی اسرائیل میں فوجی اڈے کو نقصان پہنچا اور  حملے میں ایک لڑکی زخمی ہوئی، خطرات ابھی ٹلے نہیں ہیں اور فورسز خطرات کا مقابلہ کر رہی ہیں۔

 

ایران کے وزیر دفاع نے پڑوسی ممالک کو خبردار کیا ہے کہ  جو بھی ڈرون کو روکنے کے لیے اسرائیل کے لیے اپنی فضائی حدود کھولے گا اسے نشانہ بنایا جائے گا۔

 

دوسری طرف یمن کے حوثیوں، لبنان کی حزب اللہ اور فلسطین کی مزاحمتی تنظیم حماس کی جانب سے بھی اسرائیل پر حملے کی اطلاعات ہیں۔

تبصرے بند ہیں.