شہباز گل کی گرفتاری سے روکنے کی درخواست پر فوری سماعت کی استدعا مسترد

12

کراچی: سندھ ہائیکورٹ نے قومی اداروں کے خلاف تضحیک آمیز بیان دینے سے متعلق پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) رہنما شہباز گل کی گرفتاری سے روکنے کی درخواست پر فوری سماعت کی استدعا مسترد کر دی ہے۔ 
تفصیلات کے مطابق جسٹس عرفان سعادت خان کی سربراہی میں سندھ ہائیکورٹ کے 2 رکنی بینچ نے قومی اداروں کیخلاف تضحیک آمیز بیان دینے سے متعلق شہباز گل کی گرفتاری سے روکنے سے متعلق درخواست پر سماعت کی۔ 
درخواست گزار کے وکیل نے موقف اختیار کیا کہ شہباز گل کی درخواست پر حتمی فیصلہ ہونے تک پولیس کو شہباز گل کو گرفتار کرنے سے روکا جائے تاہم عدالت نے شہباز گل کی درخواست کی فوری سماعت کی استدعا مسترد کردی۔
جسٹس عرفان سعادت خان نے ریمارکس دئیے کہ ہم صرف نئے مقدمات کی فوری سماعت کی اجازت دیتے ہیں اور پہلے سے زیر سماعت مقدمے میں فوری سماعت کی استدعا منظور نہیں کی جاتی لہٰذا عدالتی قواعد کے مطابق روسٹر برانچ کے ذریعے درخواست دائر کی جائے۔
واضح رہے کہ درخواست میں موقف اپنایا گیا تھا کہ میرے خلاف تھانہ سرجانی ٹاؤن، بریگیڈ اور رضویہ میں مقدمات درج کئے گئے ہیں اور بیان سے متعلق مقدمہ لاہور کے تھانہ مانگا منڈی میں بھی درج ہوچکا ہے۔ 
درخواست میں مزید کہا گیا کہ ایک واقعہ کا ایک ہی مقدمہ درج کیا جاسکتا ہے لہٰذا کراچی میں درج مقدمات کو کالعدم قرار دیا جائے، عدالت نے پولیس سے کراچی میں درج مقدمات کی تفصیلات 17 جنوری کو طلب کر رکھی ہیں۔

تبصرے بند ہیں.