پارکس ، جم ، بیوٹی سیلون کے بعد طالبان نے لڑکیوں کے کلاس 3 سے آگے پڑھنے پر پابندی لگا دی

38

 

کابل: طالبان نے لڑکیوں کے کلاس3 سے آگے پڑھنے پر پابندی لگادی ہے۔ طالبان نے ملک میں خواتین کے پارکس،جم ، بیوٹی سیلون پر پابندی کے بعد ایک اور قدم اٹھاتےہوئے پرائمری سکول میں کلاس تھری میں بچیوں کی تعلیم پر پابندی لگادی ہے۔خواتین کے پبلک میں بھی جانے پر پابندی ہے۔

 

طالبان نے پہلے ہی سیکنڈری سکول میں لڑکیوں کی تعلیم پر پابندی  لگارکھی ہے۔ملک بھر میں سیکنڈری سکولوں میں لڑکیوں کی تعلیم پر پابندی کے بعد طالبان نے اب کلاس 3 سے آگے پڑھنے پر بھی پابندی عائد کردی ہے۔

 

رپورٹ کے مطابق طالبان نے 10 سال سے زائد عمر کی لڑکیوں کی تعلیم پر پابندی عائدکی ہے جس کے بعد کلاس 3 کے بعد لڑکیاں تعلیم جاری نہیں رکھ سکیں گی۔منسٹری آف پریچنگ اینڈ گائیڈنس جس کو پہلے ویمن افیئر منسٹری کہاجاتا تھا  نے سکول کی سربراہان کو گائیڈ لائینز دی ہیں کہ جولڑکیا ں تیسری جماعت سے  بڑی جماعت میں ہیں ان کو گھر بھیج دیاجائے ۔غزنوی میں طالبان  منسٹری آف ایجوکیشن کونوٹیفائی کیا ہے کہ پرائمری سیکشن میں دس برس سے بڑی بچیوں کو پڑھنے کی اجازت نہیں ہے۔غزنی صوبے میں طالبان حکومت کی وزارت تعلیم کے حکام نے سکولوں اور مختصر مدت کے تربیتی پروگراموں کے سربراہوں کو مطلع کیا ہے کہ 10 سال سے زیادہ عمر کی لڑکیوں کو پڑھنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

 

رپورٹ میں دعویٰ کیا گیا ہے کہ دیگر صوبوں میں ‘وزارت تبلیغ اور رہنمائی’ نے لڑکیوں کے سکولوں کے سربراہوں سے کہا ہے کہ کسی بھی طالبہ کو تیسری جماعت سے آگے تعلیم حاصل کرنے کی اجازت نہیں ہوگی۔

قبل ازیں طالبان نے لڑکیوں کے سیکنڈری تعلیم پر پابندی عائد کر رکھی تھی تاہم پرائمری سکول میں پانچویں جماعت تک لڑکیاں تعلیم حاصل کر رہی تھیں جب کہ خواتین پر ملازمتوں کے دروازے بند ہیں اور انہیں پارکوں، جمز اور پارلرز میں بھی جانے کی اجازت نہیں ہے۔

 

 

تبصرے بند ہیں.