خیبر پختونخوا اسمبلی میں مالی سال 2021-22بجٹ پیش کر دیا گیا ،تنخواہوں میں اضافہ 

بیوائوں کی پنشن میں 100 فیصد اضافہ ،مراعات نہ لینے والے ملازمین کی تنخواہوں میں 37 فیصد اضافہ

99

 پشاور:خیبر پختونخوا کا بجٹ وزیر خزانہ  تیمور سلیم جھگڑا نے پیش کر دیا ،تیمور سلیم جھگڑا کا بجٹ تقریر میں کہنا تھا پچھلے سال خیبرپختونخوا حکومت کو کورونا کی صورتحال کا سامنا تھا ،ایک سال میں حکومت نے کورونا سے نمٹنے کیلئے کامیاب حکمت عملی اختیار کی،2020-21 میں خیبرپختونخوا حکومت نے تاریخی اور مثالی کام کئے۔

صوبہ خیبر پختونخوا کے مالی سال 2021-22 کابجٹ پیش کرتے ہوئے وزیر خزانہ تیمور سلیم جھگڑا کا کہنا تھا کہ  بیواوَں کی پنشن میں 100 فیصد اضافہ کر رہے ہیں ، مزدورں کی کم ازکم اجرت21ہزارروپےمقررکردی گئی ہے ، کوئی مراعات نہ لینے والے سرکاری ملازمین کی تنخواہوں میں 37فیصد کیا جائے گا۔

 تفصیلات کے مطابق صوبائی اسمبلی کا بجٹ اجلاس سپیکر صوبائی اسمبلی مشتاق غنی کی صدارت میں شروع ہوا جس میں صوبائی وزیرخزانہ تیمورسلیم جھگڑا نے مالی سال 2021،22 کا بجٹ پیش کردیا ، خیبرپختونخوا کے بجٹ برائے مالی سال 2021-22 کا کل تخمینہ 1 ہزار 118 ارب روپے ہے ، بندوبستی اضلاع کا بجٹ 919 ارب اور قبائلی اضلاع کا بجٹ 199 ارب3 کروڑ روپے، صوبے کے اخرجات جاریہ کی مدمیں 747 ارب روپے رکھنے کی تجویز دی گئی ہے ۔

خیبرپختونخوا کا سالانہ ترقیاتی بجٹ 371 ارب روپے تجویز کیا ہے ، سالانہ ترقیاتی بجٹ کے 100.3 ارب ضم اضلاع میں خرچ ہوں گے، ترقیاتی بجٹ کے 270.7 ارب روپے باقی اضلاع کے لیے رکھے گئے ہیں ، پشاور میں 345 کنال پر نیا بس ٹرمنل تعمیر کیا جائے گا۔

تبصرے بند ہیں.