بلوچستان میں سب سے بڑا چیلنج گورننس کا ہے, بہتری کے لئے ساٹھ کے قریب اصلاحات تجویز کی گئی ہیں: سرفراز بگٹی

18

کوئٹہ :وزیر اعلیٰ بلوچستان میر سرفراز بگٹی کا کہنا ہے کہ   بلوچستان میں سب سے بڑا چیلنج گورننس کا ہے، گورننس میں بہتری کے لئے ساٹھ کے قریب اصلاحات تجویز کی گئی ہیں۔وزیر اعلیٰ بلوچستان میر سرفراز بگٹی کی زیر صدارت بلوچستان صوبائی کابینہ کا پہلا اجلاس ہوا، وزیر اعلیٰ بلوچستان کو گڈ گورننس ، عوام اور صوبے کی بہتری کا ایجنڈا پیش کیا گیا۔

وزیر اعلیٰ بلوچستان میر سرفراز بگٹی کا کہنا ہے کہ بلوچستان میں سب سے بڑا چیلنج گورننس کا ہے، گورننس میں بہتری کے لئے ساٹھ کے قریب اصلاحات تجویز کی گئی ہیں۔ان کاکہنا تھا کہ کابینہ سے مشاورت کے بعد اصلاحاتی عمل کو حتمی شکل دی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ بلوچستان کو بہتری کی راہ پر گامزن کرنے کے لئے کابینہ پر بھاری ذمہ داری عائد ہوتی ہے، صوبے میں امن وامان کے اقدامات صرف فوج اور ریاست تک محدود نہیں، دہشتگردی کے خاتمے کی لڑائی ہم سب کی مشترکہ لڑائی ہے ۔عام آدمی کی بہتری کیلئے ہم سب نے مل کر کام کرنا ہے، ہم اہداف طے کرکے اس پر بتدریج عمل درآمد کو یقینی بنائیں گے۔

وزیر اعلیٰ بلوچستان نے کہا کہ آنے والی نسلوں کے روشن مستقبل کے لئے نیک نیتی سے کام اور مثبت سمت کا تعین کرکے صوبے میں اچھی طرز حکمرانی کی عملی مثال قائم کریں گے، صوبے میں کوئی نوکری نہیں بکے گی۔ وزراء اپنے اپنے محکموں کے انچارج ہیں ، محکمانہ امور پر کڑی نظر رکھیں ۔  میرٹ پر کوئی سمجھوتہ قابل قبول نہیں۔

تبصرے بند ہیں.