پاکستان میں فارن سپلائرز کو بزنس کرنے کی اجازت دینے کا فیصلہ

31

کراچی :پاکستان میں فارن سپلائرز کو بزنس کرنے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیاگیاہے۔ ایف بی آر کا کہنا ہے کہ کسٹمز رولز 2001 میں مزید ترامیم کیلئے نوٹیفکیشن جاری کردیا گیا، جس کے مطابق  پاکستان میں فارن سپلائرز کو بزنس کرنے کی اجازت دینے کا فیصلہ کیا گیا ہے۔

ایف بی آر کا کہنا ہے کہ غیر ملکی سپلائرز یہاں اپنا رجسٹرڈ بزنس قائم کر سکیں گے، فارن سپلائرز کو ذیلی کمپنی قائم کرنے کا بھی اختیار حاصل ہوگا۔خام تیل اور دیگر پیٹرولیم مصنوعات درآمد کرنے کی اجازت ہوگی، پیٹرولیم مصنوعات مقامی مارکیٹ میں فروخت یا برآمد کرنے کی اجازت ہوگی، درآمد کردہ مال کسٹمز اسٹوریج فیسلیٹی میں رکھنے کی سہولت ملے گی۔

ایف بی آر کا کہنا ہے کہ فارن سپلائرز پاکستان میں کسی بھی جگہ ویئر ہاؤس استعمال کر سکیں گے، پیٹرولیم مصنوعات درآمد کرکے بیرون ملک ایکسپورٹ کی بھی اجازت ہوگی۔نوٹیفکیشن کے مطابق  غیر ملکی سپلائرز کو ویئر ہاؤس رینٹ، پورٹ اور دیگر سروس چارجز ادا کرنا ہوں گے،  واجبات فارن کرنسی یعنی ڈالرز میں بینکنگ چینلز کے ذریعے ادا کرنا ہوں گے،  فارن سپلائز یا سبسڈری کو اسٹیٹ بینک اور کسٹمز کی ہدایات پر عمل کرنا ہوگا۔

تبصرے بند ہیں.