پاکستان میں معاشی استحکام کے آثار نمایاں ہونے کی تصدیق، بلوم برگ نے شرح نمو میں دوگنا اضافے کی پیشگوئی کردی

25

سلام آباد : بلوم برگ  نے  شرح نمو میں دوگنا اضافے کی پیشگوئی کردی ہے۔ ورلڈ بینک اور بلوم برگ کی رپورٹس میں پاکستان میں معاشی استحکام کے آثار نمایاں ہونے کی تصدیق کی گئی ہے۔ورلڈ بینک اور معتبر عالمی مالیاتی خبر رساں ادارے بلوم برگ کی رپورٹس میں پیشگوئی کی گئی ہے کہ شرح نمو میں اضافے اور معیشت نے ترقی دکھانا شروع کر دی ہے، رواں مالی سال کی نسبت آئندہ مالی سال میں شرح نمو میں دوگنا اضافے اور بتدریج بڑھوتری ہوگی۔

ورلڈ بینک کی رپورٹ پر بلوم برگ کی تجزیاتی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اگلے مالی سال مہنگائی میں 11 فیصد کمی متوقع ہے، آئی ایم ایف کے نئے بیل آؤٹ پروگرام سے معاشی شرح نمو میں مزید تیزی اور استحکام آئے گا۔بلوم برگ کی رپورٹ کے مطابق گزشتہ 22 ماہ میں مہنگائی کی شرح پہلی بار سب سے کم 20.7 فیصد پر آگئی ہے، 2 سال بعد مہنگائی کی شرح میں کمی کا رجحان دیکھنے میں آرہا ہے۔

بلوم برگ رپورٹ کے مطابق گزشتہ 22 ماہ میں مہنگائی کی شرح پہلی بار سب سے کم 20.7 فیصد کی شرح پر آگئی ہے، دو سال کے بعد مہنگائی کی شرح میں کمی کا رجحان دیکھنے میں آرہا ہے، جولائی سے شروع ہونے والے مالی سال کے دوران پاکستان کو 24 ارب ڈالر کی بیرونی مالی مدد درکار ہوگی۔

رپورٹ کے مطابق جولائی سے شروع مالی سال میں پاکستان کو 24ارب ڈالر کی بیرونی مالی مدد درکار ہوگی، وزیراعظم شہباز شریف نے 16ماہ کی حکومت میں ملک کو معاشی ڈیفالٹ سے بچانے کے لیے مشکل فیصلے کیے تھے، شہباز شریف کی مخلوط حکومت نے آئی ایم ایف پروگرام بحال کیا، سٹینڈ بائی ارینجمنٹ کے نتیجے میں معاشی استحکام کی راہ ہموار ہوئی۔

تبصرے بند ہیں.