واٹس ایپ کے پرائیویسی فیچر میں نئی تبدیلیاں

52

 

کیلیفورنیا: پیغام رسانی کے مقبول پلیٹ فارم میٹا کے ملکیت والے واٹس ایپ نے ایک نیا فیچر متعارف کرایا ہے جو صارفین کو براہ راست اپنی لاک اسکرین سے سپیم کانٹیکٹکس کو بلاک کرنے کی اجازت دیتا ہے۔

 

واٹس ایپ کی نیوز ٹریکر ویب سائٹ ویب بیٹا انفو کے مطابق اس اپ ڈیٹ کا مقصد سپیم پیغامات کے بڑھتے ہوئے سپیم میسجز کا مقابلہ کرنا اور صارفین کو ان کے پیغام رسانی کے تجربے پر زیادہ کنٹرول دینا ہے۔ صارفین کو ان کی لاک اسکرینوں سے براہ راست کارروائی کرنے کی اجازت دے کر، واٹس ایپ کا مقصد صارف کی رازداری اور سیکیورٹی کو بڑھانا ہے جبکہ پیغام رسانی کے مزید تجربے کو فروغ دینا ہے۔

 

نیا فیچر واٹس ایپ صارفین کو اس قابل بناتا ہے کہ وہ اپنے موبائل کو ان لاک کرنے یا ایپ کے ذریعے نیویگیٹ کیے بغیر سپیم پیغامات کی شناخت اور بلاک کر سکیں۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ واٹس ایپ پہلے ہی کسی بھی نامعلوم نمبر کے رابطے کی تفصیلات کے نیچے ایک احتیاطی نوٹ دکھاتا ہے جس سے آپ کو کوئی پیغام موصول ہوتا ہے۔ اس کے بعد رابطے کو شامل کرنے، اسے بلاک کرنے یا رپورٹ کرنے اور اسے بلاک کرنے کے اختیارات آتے ہیں۔ ان براہ راست اختیارات کے علاوہ، آپ پہلے سے کسی رابطے کو روک سکتے ہیں۔ہوم پیج پر مزید اختیارات کے سیکشن میں، ترتیبات > رازداری > بلاک کانٹیکٹکس > شامل کریں > تلاش کریں یا وہ رابطہ منتخب کریں جسے آپ بلاک کرنا چاہتے ہیں۔

 

واضح رہے کہ واٹس ایپ میں صارفین کی پرائیویسی اور سکیورٹی کو ترجیح دینے کا سلسلہ جاری رکھتا ہے۔  واٹس ایپ کی نیوز ٹریکر ویب سائٹ ویب بیٹا انفو کے مطابقواٹس ایپ کی جانب سے ایک نئے فیچر کی آزمائش اینڈرائیڈ ڈیوائسز کے بیٹا (beta) ورژن میں کی جا رہی ہے۔

 

 

اس فیچر کے تحت صارفین کی سکیورٹی اور پرائیویسی کے لیے جب کسی چیٹ کو مین ڈیوائس میں لاک کیا جائے گا تو اس کا اطلاق دیگر لنکڈ ڈیوائسز پر بھی ہوگا۔

تبصرے بند ہیں.