ریاست کرپشن اور سمگلنگ میں معاون ہے، پولیس اور پٹواری سسٹم ختم کردیا جائے: چیف جسٹس 

206

 

اسلام آباد: 70 تولے سونے کی کمیٹی کا معاملہ سپریم کورٹ پہنچ گیا ، عدالت نے گرفتار ملزمان کی ضمانت منظور کرلی۔ چیف جسٹس قاضی فائز عیسیٰ  نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہاکہ کیس میں اصل ملزم تو پولیس کو بنانا چاہیے۔ لگتا ہے پولیس اب کرائے کی پولیس بن گئی ہے۔ پولیس کی اب اپنی عزت نہیں رہی، ادارے کی عزت ہونی چاہیے، پولیس اور پٹواری کا شاہی سسٹم ختم ہونا چاہیے۔

 

چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے سماعت کی۔ ایڈیشنل پراسیکیوٹر نے بتایا کہ دس گرام سونے کی کمیٹی نکلنے پرادا نہیں کی گئی۔ چیف جسٹس  نے پوچھا کہ گرفتار سنار  نے کتنا سونا کمیٹی کے ذریعے دینا تھا ؟ مدعی بولے کمیٹی سے نکلنے والا 70 تولہ سونا نہیں دیا گیا ۔

 

چیف جسٹس نے ریمارکس دیے کہ ڈیڑھ کروڑ مالیت سونے کا کوئی انکم ٹیکس ادا نہیں کیا گیا یہ سونا کہاں سے آتا ہے؟ اسکی قانونی حیثیت کیا ہے؟ ریاست کرپشن اور اسمگلنگ کرنے میں معاونت کرتی ہے۔

 

چیف جسٹس  نے مزیدکہا کہ کیس میں اصل ملزم توپولیس کو بنانا چاہیے۔ پولیس والا سونے کا صرف اپنے مطلب کیلئے ہی پوچھے گا۔ کمیٹی گرفتار ملزم  نے بنائی۔ تفتیش اہلخانہ سے ہوئی۔ عدالت نے سونے کی کمیٹی میں دو لاکھ روپے مچلکوں کے عوض گرفتار ملزم کی ضمانت منظورکرلی ۔

تبصرے بند ہیں.