حکومت پابندی لگانا چاہتی ہے، آپ ہماری مدد کریں: پی ٹی آئی کا برطانیہ، امریکا اور یورپی یونین کو خط 

41

 

اسلام آباد : تحریک انصاف نے اراکین پارلیمنٹ، سیاسی کارکنوں پرتشدد کو عالمی سطح پر اٹھانے کا فیصلہ کیا ہے۔ عمران خان، اراکین پارلیمنٹ اور کارکنان پر تشدد کے خلاف دنیا بھر کی پارلیمان سے نوٹس لینے کی اپیل ہے۔

 

سابق سپیکر قومی اسمبلی اسد قیصر نے یورپی یونین، آئی پی یو، سی پی اے،امریکی ایوان نمائندگان، ہاؤس آف لارڈز اور انسانی حقوق کی تنظیموں کو خطوط ارسال کردیے اور کہا کہ خِبرپختونخوا اور پنجاب میں نگراں حکومتوں نے سیاسی ورکروں کی آواز دبانے کیلئے شدید انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کیں سابق وزیراعظم عمران خان کو سیاست سے نکالنے کیلئے جھوٹے فوجداری مقدمات درج کیے گئے۔

 

سابق اسپیکر قومی اسمبلی و پی ٹی آئی رہنما اسد قیصر نے دنیا بھر کے پارلیمانی و انسانی حقوق کے فورمز کو خطوط ارسال کردیے جس میں کہا گیا ہے کہ بطور سابق اسپیکر پاکستان میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں علم میں لانا چاہ رہا ہوں پاکستان تحریک انصاف ملک کی مقبول ترین سیاسی جماعت ہے۔

 

خطوط میں کہا گیا کہ سیاسی ہارس ٹریڈنگ کے بعد پی ٹی آئی نے فریش مینڈیٹ کا فیصلہ کیا اور ایوان سے مستعفی ہوئے ۔خِیبرپختونخوا اور پنجاب میں نگراں حکومتوں نے سیاسی ورکروں کی آواز دبانے کیلئے شدید انسانی حقوق کی خلاف ورزیاں کیں۔ سابق وزیراعظم عمران خان کو سیاست سے نکالنے کیلئے جھوٹے فوجداری مقدمات درج کیے گئے۔

 

مراسلوں میں کہا گیا کہ عمران خان کو قاتلانہ حملے میں 11 گولیاں ماری اور 127 مقدمات درج کیے گئے۔سابق وزیراعظم کے گھر پر متعدد حملے اور کارکنان پر تشدد کیا گیا۔مشہور صحافی ارشد شریف کو قتل کیا گیاان کی ماں کو ابھی تک انصاف نہیں ملا۔

 

اسد قیصر نے لکھا کہ پی ٹی آئی کارکن ضلے شاہ کو پنجاب پولیس حراست کے دوران تشدد سے قتل کیا گیاعمران خان پر اپنے ہی کارکن علی بلال عرف ضلے شاہ کے قتل کا مقدمہ درج کیا گیاپی ڈی ایم پاکستان کی اعلی عدلیہ پر جعلی آڈیو ویڈیو کے زریعے بلیک میلنگ حملے کرچکی ہےپاکستان متعدد عالمی انسانی حقوق کنونشن پر دستخط کرچکا ہے۔حکومتی کارروائیوں کو نا روکا گیا تو پی ٹی آئی پر غیر آئینی طور پر پابندی عائد کرنے کی کوشش کی جارہی ہے۔

 

خط میں مزید کہا گیا کہ الیکشن کمیشن نے غیر آئینی طور پر دو صوبوں میں سپریم کورٹ کے واضح احکامات کے باوجود انتخابات ملتوی کیے۔ وزیراعظم شہباز شریف نے تشدد کے خلاف مزاہمت کرنے والے پارٹی کارکنان کو عسکریت پسند کہا وزیراعظم کی بھتیجی مریم نواز نے سیاسی ورکروں کو تعصب اور نسل پرستانہ قرار دیاپاکستانی عوام کی سیاسی نسل کشی، جمہوریت کی تباہی کو روکنے میں کردار ادا کریں۔

 

تبصرے بند ہیں.