مکی آرتھر نے پاکستان کرکٹ ٹیم کا ہیڈ کوچ بننے کی پیشکش مسترد کر دی

22

لاہور: جنوبی افریقہ سے تعلق رکھنے والے کوچ مکی آرتھر نے دوسری بار پاکستان کرکٹ ٹیم کا ہیڈکوچ بننے کی پیشکش مسترد کر دی ہے۔ 
غیر ملکی میڈیا رپورٹ کے مطابق مکی آرتھر ڈربی شائر سے کنٹریکٹ کے باعث پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) کے ساتھ فی الحال سالانہ بنیاد پر معاہدہ نہیں کر سکتے۔ 
رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مکی آرتھر نے حال ہی میں ڈربی شائر کاؤنٹی کلب کے ساتھ 2025 تک کنٹریکٹ میں توسیع کی ہے جس کے باعث وہ زیادہ سے زیادہ کچھ ہفتوں کیلئے کنسلٹنٹ یا پاکستان سپر لیگ (پی ایس ایل) میں ہیڈکوچ کا کام کرسکتے ہیں۔
میڈیا رپورٹس میں بتایا گیا ہے کہ مکی آرتھر نے ڈربی شائر کی انتظامیہ کو کاؤنٹی کلب کے ساتھ اپنی مصروفیات جاری رکھنے سے آگاہ کر دیاہے۔ 
پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) نے مکی آرتھر سے ہیڈ کوچ کیلئے بات چیت ختم ہونے کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ مکی آرتھر کو تین سال کیلئے ہیڈ کوچ بنانے کی غرض سے رابطہ کیا گیا تھا۔ 
ترجمان پی سی بی نے بتایا کہ مکی آرتھر کی مصروفیات کی وجہ سے کنسلٹنٹ کے عہدے کیلئے بھی بات کی گئی تھی تاہم بعض وجوہات کی بناءپر کنسلٹنٹ کے عہدے پر بھی پیش رفت ممکن نہ ہو سکی۔ 
ترجمان کا مزید کہنا ہے کہ پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) بہترین ہیڈ کوچ کی تلاش جاری رکھے گا اور اس عہدے کیلئے بعض بڑے نام زیر غور ہیں۔ 
واضح رہے کہ مکی آرتھر بطور ہیڈ کوچ 2016 سے 2019 تک پاکستان کرکٹ ٹیم کے ساتھ منسلک رہے اور ان کی کوچنگ کے دوران ہی پاکستان نے انٹرنیشنل کرکٹ کونسل (آئی سی سی) چیمپئنز ٹرافی کا ٹائٹل جیتا تھا۔ 

تبصرے بند ہیں.