بابراعظم سے درخواست ہے کہ میرے لئے سلیکٹرز سے بات کریں: عمر اکمل

19

لاہور: پاکستان کرکٹ ٹیم کے مڈل آرڈر بلے باز عمر اکمل نے کہا ہے کہ بابراعظم سے یہ کبھی نہیں کہا کہ مجھے ٹیم میں لیں، مگر میری ان سے درخواست ہے کہ وہ سلیکٹرز یا سینٹرل پنجاب کے کوچ سے میرے لئے بات کریں۔ 
تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی کے پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے عمر اکمل کا کہنا تھا کہ سری لنکا کے خلاف سیریز میں میرا کم بیک ہوا تاہم میں پہلی گیند پر ہی آؤٹ ہو گیا، اگر اس مرتبہ میں سیٹ ہو کر آؤٹ ہوتا تو بات بھی نہ کرتا۔ 
ان کا کہنا تھا کہ اپنے پورے کیرئیر میں 3 بار کم بیک کیا لیکن تینوں بار مجھے یہ تک معلوم نہیں تھا کہ ڈراپ کیوں کیا گیا ہے، مجھے فرسٹ کلاس کرکٹ کیوں نہیں دی جاتی، اس بارے میں بھی کچھ معلوم نہیں۔ 
عمر اکمل نے کہا کہ میں پاکستان کرکٹ بورڈ (پی سی بی) سے صرف اپنی فرسٹ کلاس کرکٹ مانگ رہا ہوں کیونکہ اگر کارکردگی دکھانے میں کامیاب ہوا تو قومی ٹیم کے دروازے بھی کھل جائیں گے۔ 
جب ان سے یہ سوال کیا گیا کہ آپ نے کبھی بابراعظم سے کہا کہ مجھے ٹیم میں شامل کریں؟ تو انہوں نے جواب دیا کہ میں نے اس حوالے سے کبھی بابر سے بات نہیں کی لیکن بابر بات سنی جاتی ہے تو اسے خود اس حوالے سے سوچنا چاہیے۔ 
ان کا کہنا تھا کہ بابر بیک ٹو بیک سیریز کھیل رہا ہے اور مجھے پتہ ہے کہ اسے ان باتوں کا علم ہے لہٰذا اگر میں نے بابر سے کہا اور اس نے مجھے انکار کر دیا تو مجھے تکلیف ہو گی کیونکہ وہ چھوٹا ہے۔ 
میری بابراعظم سے درخواست ہے کہ اگر میں بطور کپتان بابر کے منصوبے کا حصہ ہوں میری درخواست ہے بابر میرے لئے سلیکٹرز سے یا سینٹرل پنجاب کے کوچ سے بات کرے۔
سینٹرل پنجاب کے کوچ عبد الرزاق کے حوالے سے بات کرتے ہوئے عمر اکمل کا کہنا تھا کہ اگر پلیئر کو عزت نہ ملے اور بلامقصد سائیڈ پر کیا جائے تو کوئی کھلاڑی کب تک خاموش رہے گا۔ 
انہوں نے کہا کہ عبد الرزاق میرے ساتھ زیادتی کررہے ہیں لیکن میں کسی کے ساتھ پرسنل نہیں ہوا اور میں نے اسی وجہ سے نقصان اٹھایا کیونکہ مجھے جو صحیح لگتا ہے اور جو سچ ہوتا ہے میں وہی بولتا اورکرتا ہوں۔

تبصرے بند ہیں.