اسمبلی اجلاس ہو رہا ہو تو گورنر راج نہیں لگایا جا سکتا: وزیراعلیٰ پنجاب

23

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی نے کہا ہے کہ اپوزیشن اقلیت میں ہے اوراقلیت میں ہی رہے گی، عدم اعتماد کی تحریک لانا ان کے بس کی بات نہیں تاہم جسے شوق ہے وہ لے آئے، اسمبلی ان سیشن ہو تو تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ ہو سکتی ہے نہ ہی اعتماد کا ووٹ لینے کا کہا جاتا ہے جبکہ اسمبلی اجلاس ہو رہا ہو تو گورنر راج بھی نہیں لگ سکتا۔ 
تفصیلات کے مطابق پاکستان براڈکاسٹرز ایسوسی ایشن (پی بی اے) کے وفد نے وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویز الٰہی سے ملاقات کی۔ پی بی اے کے وفد میں چیئرمین شکیل مسعود حسین، سیکرٹری جنرل میاں عامر محمود، ناز آفرین سہگل اورچیئرمین نئی بات میڈیا نیٹ ورک چوہدری عبدالرحمان شامل تھے۔
ذرائع کے مطابق صوبائی سیکرٹری اطلاعات آصف بلال لودھی، سابق پرنسپل سیکرٹری وزیراعلیٰ جی ایم سکندر، پریس سیکرٹری وزیراعلیٰ اقبال چودھری، ڈی جی پی آر افراز احمد بھی اس موقع پر موجود تھے جبکہ ملاقات میں پاکستان براڈ کاسٹرز ایسوسی ایشن کے مسائل کے حل کے حوالے سے بات چیت کی گئی جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب نے ایسوسی ایشن کو واجبات کی جلد ادائیگی کی یقین دہانی کروائی۔ 
چوہدری پرویز الٰہی نے پاکستان براڈ کاسٹرز ایسوسی ایشن کے نومنتخب چیئرمین اور عہدیداروں کیلئے نیک خواہشات کا اظہار کرتے ہوئے امید ظاہر کی ہے کہ پی بی اے کے نومنتخب چیئرمین شکیل مسعود اور دیگر عہدیداران میڈیا انڈسٹری کی ترقی کیلئے اپنی تمام صلاحیتیں بروئے کار لائیں گے۔
اس موقع پر انہوں نے حالیہ سیاسی صورتحال پر گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) چیئرمین عمران خان کے ساتھ کھڑے ہیں اور ان کی ہدایت پر اسمبلی توڑنے کیلئے ہروقت تیار ہیں، وہ جب کہیں گے پنجاب اسمبلی تحلیل کر دیں گے، پنجاب اسمبلی میں ہمیں اکثریت حاصل ہے۔ 
ان کا کہنا تھا کہ اپوزیشن اقلیت میں ہے اوراقلیت میں ہی رہے گی، اپوزیشن والے صرف نعرے لگا سکتے ہیں،عدم اعتماد لانا ان کے بس کی بات نہیں، تحریک عدم ا عتماد کا جسے شوق ہے،وہ لے آئے، اسمبلی ان سیشن ہو تو تحریک عدم اعتماد پر ووٹنگ ہو سکتی ہے اور نہ ہی اعتماد کا ووٹ لینے کا کہا جاسکتا ہے، اسمبلی کا اجلاس ہورہا ہوتو گورنر راج بھی نہیں لگ سکتا۔

تبصرے بند ہیں.