چیف آف آرمی سٹاف کی تعیناتی پر مشاورت ہو جائے تو کوئی مضائقہ نہیں: صدر مملکت

11

لاہور: صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ آئین چیف آف آرمی سٹاف کی تعیناتی پر مشاورت کی اجازت نہیں دیتا لیکن اگر آرمی چیف کی تعیناتی پر مشاورت ہو جائے تو کوئی مضائقہ بھی نہیں ہے، میں نے مذاکرات کی کوشش کی تاکہ انتخابات کا راستہ نکل آئے مگر مذاکرات کامیاب ہوئے نہ انتخابات کا کوئی حل نکلا۔ 
لاہور میں سینئر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کا کہنا تھا کہ ادارے کمزور نہیں تاہم ان میں بہتری کی ضرورت ہے، اداروں کے درمیان اختلافات دور کرنے کی کوشش کرتا رہتا ہوں، معاملات بہتر کرنے میں جو ادارے موثر ہیں، ان سے گفتگو چل رہی ہے۔ 
صدر مملکت نے کہا کہ ملک کی موجودہ سیاسی صورتحال دیکھ کر دکھ ہوتا ہے، موجودہ صورتحال میں جو بھی ہو گا وہ آئین کے مطابق ہو گا، جمہوری اداروں کے استحکام کیلئے بات چیت کرنی چاہئے، پیغام رسانی کرتا ہوں، جلد الیکشن ہوجائیں تو بہتر ہے، آئین اعتماد کاووٹ لینے کی اجازت دیتا ہے مگر میں اس اپوزیشن میں نہیں۔ 
ان کا کہنا تھا کہ میں عمران خان سے مشورہ کر کے کام نہیں کرتا، عمران خان پرانے دوست ہیں اور انہیں لیڈر مانتا ہوں، کوشش ہے عمران خان اور اسٹیبلشمنٹ کے درمیان معاملات بہتر ہوں، پاکستان کسی ملک، خصوصاً بڑے ممالک سے تعلقات خراب نہیں کرنا چاہتا۔ 

تبصرے بند ہیں.