سائفر پر صدر مملکت کا بیان، (ن) لیگی ترجمان صحافیوں کو سفید جھوٹ بولنے میں بھی کوئی مسئلہ نہیں: فواد چوہدری

64

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنماءاور سابق وزیر اطلاعات فواد چوہدری نے کہا ہے کہ سائفر کے معاملے پر (ن) لیگ کے ترجمان صحافیوں نے جس طرح صدر کے بیان کو پیش کیا، اس سے اندازہ لگا لیں کہ انہیں سفید جھوٹ بولنے میں بھی کوئی مسئلہ نہیں ہے۔ 
تفصیلات کے مطابق فواد چوہدری نے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی کے انٹرویو کا وہ حصہ سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر شیئر کیا جس میں وہ سائفر سے متعلق گفتگو کر رہے ہیں۔ فواد چوہدری نے ویڈیو شیئر کرتے ہوئے لکھا ’سائفر پر صدر نے کیا کہا اور (ن) لیگ کے ترجمان صحافیوں نے کس طرح صدر کے بیان کو پیش کیا۔ اس سے اندازہ لگا لیں کہ یہ کیسے لوگ ہیں کہ سفید جھوٹ بولنے میں بھی ان لوگوں کو کوئی مسئلہ درپیش نہیں، سیدھی بات ہے اگر عمران خان حکومت سازش سے نہیں ہٹائی گئی تو تحقیقات سے فرار کیوں؟‘ 

واضح رہے کہ صدر عارف علوی کا کہنا تھا کہ میں اس پر قائل ہوں کہ سائفر کی تحقیقات ہونی چاہئیں اور اس حوالے سے چیف جسٹس کو خط بھی بھیجا لیکن اس پر قائل نہیں کہ سازش ہوئی مگر میرے شبہات ہیں اور اس کی تحقیقات ہونی چاہئیں۔ 
انہوں نے کہا کہ لیاقت علی خان شہید کئے گئے، ایوب خان نے اپنی کتاب میں لکھا کہ ہمیں دوست چاہئیں، آقا نہیں چاہئیں۔ بھٹو صاحب نے ’میتھ آف انڈیپینڈنس لکھی“ اور پھر جب انہیں ہٹایا گیا تو راولپنڈی میں وہ ایک کاغذ لہراتے رہے۔ 
صدر مملکت کا کہنا تھا کہ ضیاءالحق کا جہاز کریش ہوا مگر کوئی تحقیقات نہیں ہوئیں، ایبٹ آباد سکینڈل ہوا، میموگیٹ سکینڈل ہوا، کسی کو چھ پتہ نہیں چلا، تو میں نے سپریم کورٹ سے درخواست کی تھی کہ واقعاتی شہادتیں بھی لے لیں۔ 

تبصرے بند ہیں.