سلمان رشدی کے ساتھ جو ہوا، اس کی گستاخی کا نتیجہ ہے: وزیراعلیٰ پنجاب

18

لاہور: وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویزالٰہی نے کہا ہے کہ سلمان رشدی کے ساتھ جو ہوا، اس کی گستاخی کا نتیجہ ہے۔ اس کی ناپاک جسارت نے مسلمانوں کے جذبات کو بری طرح مجروح کیا۔ 
تفصیلات کے مطابق وزیراعلیٰ پنجاب چوہدری پرویزالٰہی نے ایک بیان میں کہا کہ ہر مسلمان کا دل نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی محبت سے سرشار ہے، خاتم النبیین حضرت محمد مصطفی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا احترام ہر مسلمان کے ایمان کا لازمی حصہ ہے اور سلمان رشدی کی ناپاک جسارت نے مسلمانوں کے جذبات کو بری طرح مجروح کیا۔ 
ان کا کہنا تھا کہ سلمان رشدی ان منفی قوتوں کا آلہ کار ہے جو مذہب کے نام پر فساد پھیلانے کی سازش کر رہی ہیں، اس نے نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی شان اقدس میں جو شر انگیزی کی،وہ ہر مسلمان کیلئے ناقابل برداشت ہے اور امریکہ میں اس کے ساتھ جو ہوا، یہ اس کے گستاخانہ فعل کا نتیجہ ہے۔
چوہدری پرویزالٰہی نے کہا کہ محسن انسانیت حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اپنے اعلیٰ کردار اور اسوہ حسنہ کے ذریعے دنیا کیلئے ایک مثال بنے، آزادی اظہار کی آڑ میں نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی شان میں گستاخی ہر گز برداشت نہیں۔ 
ان کا مزید کہنا تھا کہ کسی بھی مہذب معاشرے میں انبیاءکرام کی شان میں گستاخی کا تصور بھی نہیں کیا جاسکتا، نبی کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کی ذات اقدس پر ہماری جان بھی قربان ہے۔
واضح رہے کہ امریکی ریاست نیویارک کے علاقے شوٹاکوا شاتم رسول سلمان رشدی پر حملہ اس وقت ہوا جب وہ جمعہ کی صبح سی ایچ کیو 22 کے عنوان سے منعقدہ تقریب سے خطاب کیلئے سٹیج پر آیا اور اس کے نتیجے میں اس کی گردن پر زخم آیا۔ 
میڈیا رپورٹس کے مطابق حملہ آور نے سٹیج پر آ کر سلمان رشدی اور انٹرویو لینے والے شخص پر چاقو سے حملہ کیا جس کے بعد اسے فوری طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں اسے وینٹی لیٹر پر منتقل کر دیا گیا ہے اور وہ بولنے کے قابل نہیں ہے جبکہ آنکھ ضائع ہونے کا خدشہ بھی ہے۔ 

تبصرے بند ہیں.