جاپان کے سابق وزیراعظم شنزوابے قاتلانہ حملے میں ہلاک

20

ٹوکیو: جاپان کے سابق وزیراعظم 67 سالہ شنزو ابے قاتلانہ حملے میں ہلاک ہو گئے ہیں جبکہ حملے کے بعد فوری بعد ایک مشکوک شخص کو حراست میں لے لیا گیا ہے۔ 
غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق سابق جاپانی وزیراعظم کو مغربی شہر نارا میں انتخابی مہم کی تقریر کے دوران گولی ماری گئی جس کے نتیجے میں وہ شدید زخمی ہو گئے۔ حملے کے بعد انہیں تشویشناک حالت میں ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئے۔ 
غیر ملکی میڈیا کا کہنا ہے کہ سیکیورٹی فورسز نے شنزو ابے پر حملے کے فوری بعد 41 سالہ مشکوک شخص کو حراست میں لے کر اسلحہ برآمد کر کے اسے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا ہے تاہم ملزم کی شناخت ظاہر نہیں کی گئی۔ 
واضح رہے کہ جاپان کے سب سے طویل عرصے تک وزیراعظم رہنے والے شنزو ابے 2006ءمیں پہلی بار ایک سال کیلئے وزیراعظم منتخب ہوئے تھے اور پھر 2012ءسے 2020ءوزارت عظمیٰ کیلئے منتخب ہوئے تاہم طبیعت ناسازی کے باعث 28 اگست 2020ءکو عہدے سے مستعفی ہو گئے۔
وزیراعظم شہباز شریف نے جاپان کے سابق وزیراعظم شنزو ابے پر قاتلانہ حملے پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ ہماری دعائیں اور نیک خواہشات اہل خانہ اور جاپانی عوام کے ساتھ ہیں۔

تبصرے بند ہیں.