پی ٹی آئی نے وزیراعلیٰ پنجاب کے انتخاب سے متعلق لاہور ہائیکورٹ کا فیصلہ چیلنج کر دیا

8

اسلام آباد: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) نے وزیراعلیٰ پنجاب کے انتخاب سے متعلق لاہور ہائیکورٹ کے فیصلے کیخلاف سپریم کورٹ میں اپیل دائر کر دی ہے۔ 
تفصیلات کے مطابق اپیل میں ڈپٹی سپیکر پنجاب اسمبلی اور حمزہ شہباز شریف و دیگر کو فریق بناتے ہوئے موقف اختیار کیا گیا ہے کہ لاہور ہائیکورٹ نے ہمارا موقف تسلیم کیا اور مختصر نوٹس پر پنجاب اسمبلی کا اجلاس بلانے کا حکم دیا لیکن مختصر وقت میں اجلاس بلانے سے عدالت کا دیا گیا ریلیف متاثر ہو گا۔ 
درخواست میں کہا گیا ہے کہ شارٹ نوٹس پر اجلاس بلانے سے ریلیف کی بجائے ہمارا نقصان ہو گا لہٰذا عدالت سے استدعا ہے کہ لاہور ہائیکورٹ فیصلے کے خلاف اپیل منظور کی جائے اور ہائیکورٹ کے فیصلے کو تبدیل کر کے اجلاس بلانے کا مناسب وقت دیا جائے۔ 
درخواست میں مزید کہا گیا ہے کہ ہمارے ارکان اجلاس میں شریک ہو سکیں اس لئے مناسب وقت دینا ضروری ہے اور اس کیساتھ ہی استدعا کی گئی ہے کہ وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز کی کامیابی کا نوٹیفکیشن معطل کیا جائے اور انہیں عہدے سے ہٹایا جائے تاکہ صاف شفاف الیکشن ہو سکیں۔ 
پی ٹی آئی کے وکیل فیصل چوہدری نے عدالت کے باہر گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ سپریم کورٹ سے اپیل کی گئی ہے کہ آج ہی سماعت کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ حمزہ شہباز شریف غیر آئینی و غیر قانونی طور پر وزیراعلیٰ بنے اور ان کا انتخاب قانون کے مطابق نہیں تھا۔ 
وکیل پی ٹی آئی نے کہا کہ عدالت کے فیصلے میں بہت زیادہ ابہام تھا اور الیکشن کس طرح ہونا ہے، یہ پنجاب اسمبلی کی صوابدید ہے جبکہ پی ٹی آئی کے امیدوار کے ساتھ ناانصافی کی گئی ہے۔ 

تبصرے بند ہیں.