بجٹ میں اپنے مطالبات کی منظوری کیلئے سرکاری ملازمین کا احتجاج

18

اسلام آباد: وفاقی بجٹ میں اپنے مطالبات منظور کروانے کیلئے سرکاری ملازمین نے پارلیمینٹ ہاؤس تک احتجاج کیا جس کے بعد وفاقی دارالحکومت میں سیکیورٹی انتہائی سخت کر دی گئی ہے۔ 
تفصیلات کے مطابق مالی سال 23-2022ءکے وفاقی بجٹ میں تنخواہوں میں اضافے سمیت دیگر مطالبات کی منظوری کیلئے سرکاری ملازمین نے احتجاجی مارچ کا اعلان کرتے ہوئے اس سلسلے میں ملک بھر کے سرکاری ملازمین کو آج وفاقی دارالحکومت پہنچنے کی کال دے رکھی تھی۔ 
ذرائع کے مطابق اپنے مطالبان کے حق میں سرکاری ملازمین نے علی الصبح وزارت خزانہ سے پارلیمینٹ ہاؤس تک مارچ کیا جس کے باعث انتظامیہ کو شاہراہ دستور کا ایک حصہ ٹریفک کیلئے بند کرنا پڑا۔ 
اس موقع پراسلام آباد پولیس کی جانب سے مظاہرین کو آگے بڑھنے سے روکنے کی کوشش بھی کی گئی جبکہ سیکیورٹی کے سخت انتظامات کے تحت پولیس اور رینجرز کی بھاری نفری بھی تعینات کر دی گئی ہے۔ 
قبل ازیں سرکاری ملازمین نے مارچ کے تناظر میں وزارت خزانہ کے سامنے رات بسر کی تاکہ صبح احتجاج کیلئے کسی رکاوٹ کا سامنا کرنا نہ پڑے۔ 

تبصرے بند ہیں.