مالی سال 23-2022ءکیلئے وفاقی بجٹ آج پیش کیا جائے گا

19

اسلام آباد: وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل مالی سال 23-2022ءکیلئے وفاقی بجٹ آج پیش کریں گے جس کے حجم کا تخمینہ تقریباً 10 ہزار ارب روپے مقرر کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ 
تفصیلات کے مطابق بجٹ میں وفاق کی مجموعی آمدن کا تخمینہ 9 ہزار 255 ارب روپے مقرر کرنے کی تجویز دی گئی ہے جبکہ صوبوں کو 4 ہزار 200 ارب روپے منتقل کرنے کا تخمینہ اور وفاق کی خالص آمدن کا تخمینہ 4 ہزار 700 ارب روپے مقرر کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ 
ذرائع کے مطابق آئندہ مالی سال کے بجٹ خسارے کا تخمینہ 4 ہزار 800 ارب روپے مقرر کرنے کی سفارش کی گئی ہے اور جاری اخراجات کا تخمینہ تقریباً 9 ہزار 500 ارب روپے مقرر کرنے کی تجویز دی گئی ہے۔ نئے مالی سال کے بجٹ میں مقامی قرضوں اور سود کی ادائیگیوں کیلئے 3 ہزار 900 ارب روپے مقرر کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ 
ذرائع کا کہنا ہے کہ بجٹ میں غیر ملکی قرضوں کی ادائیگی کیلئے 500 ارب روپے مقرر کرنے کی سفارش کی گئی ہے اور پنشن کی ادائیگی کیلئے 550 ارب روپے جبکہ دفاع کیلئے ایک ہزار 523 ارب روپے رکھنے کی تجویز دی گئی ہے۔
حکومتی امور چلانے کیلئے 527 ارب روپے رکھنے کی تجویز دی گئی ہے جبکہ گرانٹس کیلئے 580 ارب روپے مقرر کرنے، سبسڈیز کی مد میں 580 ارب روپے رکھنے اور وفاقی ترقیاتی بجٹ کیلئے 800 ارب روپے مقرر کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ 

تبصرے بند ہیں.