ڈاکٹر عامر لیاقت حسین انتقال کر گئے

118

کراچی : معروف ٹی وی میزبان اور رکن قومی اسمبلی ڈاکٹر عامر لیاقت حسین انتقال کر گئے ہیں۔
تفصیلات کے مطابق عامر لیاقت حسین کو طبیعت ناساز ہونے پر ان کے گھر سے ایمبولینس کے ذریعے آغاز خان ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں ڈاکٹروں نے ان کی موت کی تصدیق کر دی۔
ذرائع کا کہنا ہے عامر لیاقت حسین کے کمرے کا دروازہ بند تھا جسے گھر کے ملازمین کئی دیر سے کھٹکھٹا رہے تھے۔ ملازم نے بتایا کہ ڈاکٹر عامر لیاقت کی گزشتہ رات طبیعت خراب ہوئی تھی، ان کے دل میں تکلیف ہو رہی تھی جس پر انہیں ہسپتال جانے کا کہا گیا مگر انہوں نے انکار کر دیا۔
عامر لیاقت کے ڈرائیور نے پولیس کو طبیعت خرابی کی اطلاع دی اور بتایا کہ ان کے کمرے سے گزشتہ روز چیخنے کی آوازیں بھی آئیں۔ پولیس کے مطابق عامر لیاقت کے گھر بجلی نہیں تھی جس کی وجہ سے جنریٹر چل رہا تھا اور گھر میں جنریٹر کا دھواں پھیلا ہوا تھا۔
پولیس کا کہنا ہے کہ عامر لیاقت کے گھر سے شواہد جمع کئے جا رہے ہیں اور ان کے ملازمین و ڈرائیورز سے بیانات لئے جائیں گے، عامر لیاقت کی موت کی وجہ جاننے کیلئے ان کا پوسٹ مارٹم کرایا جائے گا اور اس کے بعد ہی ان کی میت کو ورثاءکے حوالے کیا جائے گا۔
سپیکر قومی اسمبلی راجہ پرویز اشرف نے عامر لیاقت حسین کے انتقال کی خبر کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے کہا کہ ایوان کی کارروائی فوری رکنی چاہئے جس کے بعد اجلاس کل شام پانچ بجے تک ملتوی کر دیا گیا۔
ڈاکٹر عامر لیاقت حسین پانچ جولائی 1971ءکو پیدا ہوئے اور 2002ءسے 2007ءتک ممبر قومی اسمبلی رہے جبکہ وہ مشرف دور میں وزیر مملکت بھی رہے اور 2018ءمیں پی ٹی آئی کے ٹکٹ پر رکن قومی اسمبلی بنے۔
عامر لیاقت حسین نے تین شادیاں کیں، پہلی شادی سیدہ بشریٰ اقبال، دوسری سیدہ طوبیٰ اور تیسری دانیہ سے کی۔ وہ بشریٰ اور طوبیٰ کو طلاق دے چکے تھے جبکہ دانیہ تاحال ان کے نکاح میں تھیں اور انہوں نے عامر لیاقت کے خلاف تنسیخ نکاح کا کیس دائر کر رکھا تھا۔

تبصرے بند ہیں.