سابق وزیر داخلہ شیخ رشید کو گرفتار یا نظر بند کئے جانے کا امکان

51

اسلام آباد:  سابق وزیر داخلہ اور عوامی مسلم لیگ کے سربراہ  شیخ رشید احمد کو پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے لانگ مارچ سے قبل گرفتار یا نظر بند کئے جانے کا امکان ہے،تاہم حتمی  فیصلہ آج وزارت داخلہ کے اجلاس میں کیا جائے گا۔

 

تفصیلات کے مطابق حکومت کی جانب سے سابق وزیر داخلہ شیخ رشید کو نظر بند یا گرفتار کیے جانے کا امکان ہے جس کا فیصلہ وزارت داخلہ کے آج ہونیوالا اجلاس میں کیا جائے گا جبکہ شیخ رشید کے تصادم سے متعلق بیان کا بھی جائزہ لیا جائے گا۔

 

دوسری جانب ملک کے اکثر شہروں میں تحریک انصاف کے خلاف پولیس کا کریک ڈاون جاری ہے، کراچی، اسلام آباد، لاہور، راولپنڈی، سیالکوٹ، ملتان، بہاولپور، ساہیوال، گجرات سمیت شہروں میں پولیس نے تحریک انصاف کے خلاف کریک ڈاؤن جاری رکھا۔ رائیونڈ، اوکاڑہ، پیرمحل، چنیوٹ، وہاڑی میں بھی چھاپوں کے دوران درجنوں کارکن اورپی ٹی آئی رہنما گرفتار کر لئے گئے۔

 

لاہور کے علاقے ماڈل ٹاؤن میں پی ٹی آئی کارکنوں کیخلاف پولیس کی چھاپہ مار کارروائی کے دوران کانسٹیبل شہید ہو گیا۔ پولیس نے فائرنگ کرنے والے باپ بیٹے کو گرفتار کر لیا۔ ڈی آئی جی آپریشنز کا کہنا ہے کہ ساجد نامی پی ٹی آئی کارکن کے گھر کی چھت سے فائرنگ کی گئی جبکہ وزیراعلیٰ پنجاب حمزہ شہباز نے واقعہ پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ماڈل ٹاؤن میں پولیس کے مطابق چھاپہ مار کارروائی کے دوران گھر کی چھت سے فائرنگ کی گئی۔ گولی کانسٹیبل کمال احمد کے سینے میں لگی جس سے وہ جاں بحق ہو گیا۔

 

پی ٹی آئی کے لانگ مار چ کو روکنے کی حکمت عملی کے تحت لاہور   میں انتظامیہ کی جانب سے داخلی و خارجی راستوں کو کنٹینز لگا کر بند کر دیا گیا ہے۔

تبصرے بند ہیں.