خواجہ سرا کیلئے متنازعہ لفظ کا استعمال، فلم دم مستم ریلیز سے پہلے ہی مشکل کا شکار

22

 

لاہور :معروف پاکستانی اداکار عمران اشرف اوراداکارہ امر خان کی فلم ’دم مستم‘ میں ٹرانس جینڈر کمیونٹی سے متعلق متنازعہ الفاظ کے استعمال پر خواجہ سرا نے  فلم کی ریلیز رکوانے کیلئے لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کر لیا۔

 

 

تفصیلات کے مطابق اداکار عدنان صدیقی کی پروڈکشن میں بننے والی فلم ’دم مستم‘میں خواجہ سرا کمیونٹی کیخلاف توہین آمیز ڈائیلاگ استعمال کرنے پر خواجہ سرا نے فلم کو ریلیز کو رکوانے کیلئے عدالت میں درخواست دائر کر دی۔

 

زینایہ نامی خواجہ سرا کی جانب سے دائر درخواست میں  موقف اپنایا گیا ہے  کہ  فلم دم مستم میں خواجہ سرا کیلئے لفظ کھسرا استعمال کیا گیا ، ان مکالموں نے خواجہ سرا کمیونٹی میں شامل لوگوں کے جذبات کو ٹھیس پہنچائی ہے ۔

لاہور ہائیکورٹ کے جسٹس شاہد وحید نے بیرسٹر محمد احمد پنسوٹا کی وساطت سے زنایہ چوہدری کی درخواست پر سماعت کی۔ اس دوران درخواست گزار کی جانب سے  عید الفطر پر ریلیز ہونے والی پاکستانی فلم دم مستم میں خواجہ سرا کیلئے کھسرا  کا لفظ خذف کرنے کی استدعا کی گئی ، بتایا گیا کہ  سپریم کورٹ خواجہ سرا کو کھسرا کہہ کر پکارنے سے روک چکی ہے۔تاہم  عدالت نے سنسر بورڈ سمیت دیگر فریقین سے جواب طلب کرلیا۔

 

 

دم مستم ایک رومانوی کامیڈی فلم ہے جو کہ عید الفطر پر سنیما گھروں میں ریلیز ہوگی ، اور فلم کے مرکزی کرداروں میں اداکارہ عمار خان اور اداکار عمران اشرف شامل ہیں جبکہ فلم کی ہدایت احتشام الدین نے دی ہے ۔

تبصرے بند ہیں.