صدر مملکت کا نگران وزیراعظم کی تقرری کیلئے عمران خان اور شہباز شریف کو خط

53

اسلام آباد: صدر مملکت عارف علوی نے نگراں وزیراعظم کی تقرری کیلئے عمران خان اور شہباز شریف کو خط لکھ دیا ہے تاہم کسی نام پر اتفاق نہ ہونے کی صورت میں معاملہ کمیٹی کو بھیجا جائے گا۔ 
تفصیلات کے مطابق نگراں وزیراعظم کی تعیناتی عمران خان اور اپوزیشن لیڈر کی مشاورت سے ہوگی اور قواعد و ضوابط کے مطابق 3 روز کے اندر کسی ایک نام پر اتفاق نہ ہونے کی صورت میں دونوں شخصیات 2,2 نام کمیٹی کو بھیجیں گی۔ 
ذرائع کا کہنا ہے کہ کمیٹی کی تشکیل سپیکر قومی اسمبلی کریں گے جس میں حکومت اور اپوزیشن کے 8,8 ارکان قومی اسمبلی یا سینیٹ ہوں گے اور دونوں جانب سے برابر نمائندگی ہو گی۔ 
واضح رہے کہ عمران خان کی تجویز پر صدر مملکت کی جانب سے قومی اسمبلی تحلیل کئے جانے کے بعد عمران خان کی بطور نگران وزیراعظم تعیناتی کا اعلامیہ ایوان صدر کی جانب سے جاری کیا جا چکا ہے۔ 
سپریم کورٹ کے سوموٹو نوٹس کی وجہ سے صدر مملکت عارف علوی نوٹیفکیشن پر ہچکچاہٹ کا شکار تھے اور انہوں نے آئین کے آرٹیکل 94 کے تحت نوٹیفکیشن جاری نہیں کیا اور موجودہ وزیراعظم کو ہی اس وقت تک اپنے عہدے پر برقرار رکھا جب تک ان کی جگہ کوئی وزیراعظم کا عہدہ نہیں سنبھال لیتا۔
یاد رہے کہ آئین کے آرٹیکل 94 کے تحت صدر، وزیراعظم سے کہہ سکتا ہے کہ وہ اس وقت تک اپنے عہدے پر برقرار رہیں جب تک ان کی جگہ کوئی اور وزیراعظم کا عہدہ نہیں سنبھال لیتا۔
دریں اثناءقومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف شہباز شریف نے قائم مقام وزیراعظم کی تقرری سے متعلق موجودہ وزیراعظم سے مشاورت سے انکار کر دیا تھا۔ انہوں نے اس عمل کو ہی غیر آئینی قرار دیا حالانکہ قومی اسمبلی تحلیل ہونے کے تین روز کے اندر قائم مقام وزیراعظم کی تقرری کا عمل مکمل کرنا ہوتا ہے۔

تبصرے بند ہیں.