ترین گروپ کے 17 ارکان اسمبلی نے واپسی کیلئے مشروط آمادگی ظاہر کر دی

101

لاہور: پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے ناراض رہنماءجہانگیر ترین گروپ کے 17 ارکان اسمبلی نے پی ٹی آئی میں واپسی کیلئے مشروط آمادگی کا اظہار کیا ہے۔ 
تفصیلات کے مطابق وزیراعظم تعلیم پنجاب مراد راس کی قیادت میں حکومتی ٹیم کی ترین گروپ سے ملاقات کی اندرونی کہانی سامنے آگئی ہے جس میں گروپ اراکین کو ان کے تحفظات دور کرنے اور ان کی وزیراعظم پاکستان عمران خان یا وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار سے براہ راست ملاقات کرانے کی پیشکش بھی کی گئی۔ 
ذرائع کا کہنا ہے کہ ترین گروپ نے حکومتی ٹیم سے ایک بار پھر وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بزدار کو تبدیل کرنے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم پارٹی نہیں چھوڑنا چاہتے، لیکن عثمان بزدار کو مائنس کرنا ہو گا۔ 
ذرائع کے مطابق ترین گروپ کے 17 ارکان اسمبلی نے ہوزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کے ساتھ تحفظات کی طویل فہرست پیش کی، اور اس کے علاوہ حلقوں کے مسائل، بیورو کریسی کے رویئے اور انتقامی کارروائیوں سے بھی حکومتی ٹیم کو آگاہ کیا۔
حکومتی مذاکراتی ٹیم کے رکن کے مطابق ترین گروپ نے حلقوں کے حوالے سے بالکل حقیقی تحفظات سامنے رکھے اور جب گروپ کو پیشکش کی گئی کہ اگر آپ وزیراعظم عمران خان کے سامنے اپنے معاملات رکھنا چاہتے ہیں تو ملاقات کا اہتمام کروا سکتے ہیں، جس پر گروپ اراکین نے کہا کہ وزیراعلیٰ پنجاب کی تبدیلی اولین مطالبہ ہے۔ 
ذرائع کا کہنا ہے کہ حکومتی ٹیم نے وزیراعظم پاکستان عمران خان اور وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار کو ترین گروپ کے مطالبات سے آگاہ کر دیا ہے، حکومتی مذاکراتی ٹیم ترین گروپ سے آج شام دوبارہ ٹیلی فونک رابطہ کرسکتی ہے، جبکہ آئندہ ایک دو روز میں ترین گروپ سے حکومتی ٹیم کی دوبارہ ملاقات کا امکان بھی ہے۔ 

تبصرے بند ہیں.