پاکستان اور بھارت کے درمیان آبی تنازعات پر مذاکرات یکم مارچ کو ہوں گے

6

اسلام آباد: پاکستان اور بھارت کے درمیان آبی تنازعات پر مذاکرات یکم مارچ سے شروع ہوں گے جن کیلئے 10 رکنی بھارتی آبی ماہرین کا وفد کل براستہ واہگہ بارڈر لاہور پہنچے گا۔ 
تفصیلات کے مطابق بھارتی وفد پی کے سکسینا کی قیادت میں پاکستان پہنچے گا جبکہ پاکستان کی نمائندگی مہر علی شاہ کمشنر انڈس واٹر کمیشن کریں گے جبکہ پاکستان کی جانب سے بھارت کے آبی منصوبوں پر اعتراضات کے بعد دونوں ممالک کے درمیان ہونے والا یہ پہلا اجلاس ہے۔ 
کمشنر انڈس واٹر کمیشن مہر علی شاہ کا اس حوالے سے کہنا ہے کہ پاکستان کو دریائے چناب پر 624 میگاواٹ کیرو ہائیڈرو پاور پراجیکٹ اور دریائے سندھ پر 24 میگاواٹ کے نیموں چلنگ جبکہ مقبوضہ کشمیر میں دریائے پونچھ پر 15 میگاواٹ کے مانڈی پراجیکٹ کے ڈیزائن پر اعتراض ہے۔ 
انہوں نے کہا کہ مذاکرات کے دوران پاکستان کی جانب سے دریائے سندھ پر ہی 19 میگا واٹ کے ٹربوک شیوک اور 25 میگا واٹ کے ہنڈررمان کے ڈیزائن پر بھی اعتراض اٹھائے گا۔ اس کے علاوہ دریائے سندھ پر ساڑھے 18 میگاوٹ کے سانکو ہائیڈرو پاور پراجیکٹ اور 19 میگاواٹ کے مینگڑم سانگرا پر بھی اٹھائے جانے والے اعتراضات پر بات چیت کی جائے گی۔ 

تبصرے بند ہیں.