پیٹرول کی قیمت میں اضافہ آئی ایم ایف کی شرط کے مطابق کیا: ترجمان وزارت خزانہ

134

کراچی: وفاقی وزارت خزانہ کے ترجمان مزمل اسلم نے کہا ہے کہ انٹرنیشنل مانیٹرنگ فنڈ (آئی ایم ایف) کی شرط کے مطابق پیٹرول کی قیمت میں اضافہ کیا گیا ہے۔ آئی ایم ایف نے 700 ارب ٹیکس کا کہا لیکن حکومت نے 350 ارب روپے کے ٹیکس عائد کئے۔ 
شہر قائد میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے مزمل اسلم نے کہا کہ مہنگائی پوری دنیا میں ہوئی ہے اور ایسی ہی مہنگائی 2008ءمیں بھی دیکھی گئی تھی، حکومت نے آئی ایم ایف کی شرط کے مطابق پیٹرول کی قیمت بڑھانی ہے۔ 
ان کا کہنا تھا کہ حکومت نے گزشتہ روز بھی عالمی مالیاتی ادارے کی شرط پر پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کیا گیا تاہم آئندہ دنوں میں پیٹرول کی قیمت میں کمی بھی ہو گی۔ 
منی بجٹ سے متعلق گفتگو کرتے ہوئے ترجمان کا کہنا تھا کہ موجودہ مالیاتی ترمیمی بل منی بجٹ نہیں ہے، گزشتہ حکومتوں کی غیر ضروری ٹیکس چھوٹ ختم کر رہے ہیں۔ آئندہ دنوں میں پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی بھی ہو گی۔ 
واضح رہے کہ حکومت نے عوام کو نئے سال کا تحفہ ’پیٹرول بم‘ کی صورت میں دیا اور پیٹرول کی قیمت میں 4 روپے فی لیٹر کا اضافہ کر دیا۔ وزارت خزانہ کی جانب سے جاری کئے گئے نوٹیفکیشن کے مطابق پیٹرول کی قیمت 4 روپے فی لیٹر اضافے کے ساتھ 144 روپے 82 پیسے ہو گئی اور ہائی سپیڈ ڈیزل کی قیمت 4 روپے اضافے کیساتھ 141 روپے 62 پیسے ہو گئی۔ 
نوٹیفکیشن کے مطابق لائٹ ڈیزل کی قیمت میں 4 روپے 15 پیسے کا اضافہ ہوا ہے اور نئی قیمت 111 روپے 6 پیسے فی لیٹر مقرر کی گئی ہے۔ اسی طرح مٹی کے تیل کی قیمت 3 روپے 95 پیسے اضافے کے ساتھ 113 روپے 53 پیسے ہو گئی ہے۔ 

تبصرے بند ہیں.