بلال یاسین کے بیٹے نے والد پر قاتلانہ حملے کی تفصیلات بتا دیں

30

لاہور: پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور رکن پنجاب اسمبلی بلال یاسین کے بیٹے نے کہا ہے کہ میرے والد علاقے کے دورے پر تھے کہ موٹر سائیکل سوار حملہ آوروں نے ان پر فائرنگ کر دی۔
سابق صوبائی وزیر خوراک بلال یاسین کے بیٹے نے میو ہسپتال میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے والد پر قاتلانہ حملے میں زخمی ہونے کے واقعے سے متعلق تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ میرے والد بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے علاقے کے دورے پر تھے کہ اس دوران موٹرسائیکل سوار حملہ آوروں نے ان پر فائرنگ کردی۔

واضح رہے کہ پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رکن پنجاب اسمبلی بلال یاسین قاتلانہ حملے میں زخمی ہوگئے۔ پولیس کے مطابق رکن صوبائی اسمبلی بلال یاسین پر لاہور کے علاقے موہنی روڈ میں فائرنگ کی گئی ، موٹر سائیکل سوار دو نامعلوم افراد نے بلال یاسین پر فائرنگ کی اور فرار ہو گئے۔
بلال یاسین کو زخمی حالت میں میو ہسپتال منتقل کیا گیا جہاں میڈیکل سپرنٹنڈنٹ (ایم ایس) ڈاکٹر افتخار نے بتایا کہ بلال یاسین کو تین گولیاں لگیں، دو پیٹ میں اور ایک گولی ٹانگ پر لگی۔ ڈی آئی جی آپریشنز کا کہنا ہے کہ بلال یاسین کو گولی لگنے کے واقعے کی تحقیقات کے ذریعے حقائق جاننے کی کوشش کر رہے ہیں۔
کیپٹل سٹی پولیس آفیسر (سی سی پی او) لاہور فیاض احمد نے بلال یاسین پر فائرنگ کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے ڈی آئی جی آپریشنز سے رپورٹ طلب کر لی ہے اور واقعہ میں ملوث ملزمان کو فوری گرفتار کرنے کی ہدایت کی ہے۔
دوسری جانب وزیراعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار نے پاکستان مسلم لیگ (ن) کے رہنماءاور رکن پنجاب اسمبلی بلال یاسین پر فائرنگ کے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے سی سی پی او لاہور سے رپورٹ طلب کر لی ہے۔ انہوں نے بلال یاسین کو علاج معالجے کی بہترین سہولیات فراہم کرنے کی ہدایات بھی جاری کی ہیں۔

تبصرے بند ہیں.