آج ملک کے غریب عوام کیلئے بڑا دن ہے: شوکت ترین

23

اسلام آباد:  وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر شوکت ترین نے کہا ہے کہ آج ملک کے غریب عوام کیلئے بڑا دن ہے، 40 لاکھ گھرانوں کو اگلے 3 ساے 4 سال میں پیسے دیئے جائیں گے۔

 اسلام آباد میں اخوت کی جانب سے کامیاب پاکستان پروگرام کے تحت بلاسود قرضوں کے حوالے سے منعقدہ تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وزیر خزانہ نے افسوس کا اظہار کیا کہ اس ملک کے غریبوں نے اپنی زندگی صرف سنہرے خوابوں کی تعبیر ڈھونڈتے گزار دی۔انہوں نے کہا کہ سابقہ ​​حکومتوں نے عوام کو معاشی ترقی کے صرف خواب بیچے لیکن یہ خواب کبھی شرمندہ تعبیر نہیں ہوئے لیکن ایک شخص آیا جو ریاست مدینہ پر یقین رکھتا ہے،انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم عمران خان نے ریاست مدینہ کو پاکستان کیلئے ماڈل بنانے کا عزم کر رکھا ہے،  وزیراعظم نے غریبوں کی بہتری کا فیصلہ کیا۔

شوکت ترین نے کہا کہ وزیر اعظم نے ان سے کچھ ایسا کرنے کو کہا جس سے غریب عزت کے ساتھ کما سکے،انہوں نے کہا کہ وزیر اعظم خان نے انہیں لوگوں کو ہیلتھ کارڈ فراہم کرنے کی ہدایت کی تاکہ وہ اپنے صحت کے اخراجات برداشت کر سکیں۔

معیشت کو آگے بڑھانے کے لیے اخوت کی جانب سے بلا سود قرض کی سہولت کو سراہتے ہوئے وزیر خزانہ نے اس امید کا اظہار کیا کہ اس سے معیشت میں بہتری آسکتی ہے۔ انہوں نے کہا کہ تمام بڑے اور چھوٹے بینک اس کوشش میں شامل ہوں گے اور وہ قرض فراہم کریں گے۔ ان کا خیال تھا کہ حکومت کی طرف سے قرض کی سہولت سے 40 لاکھ گھر مستفید ہوں گے۔

انہوں نے کہا کہ لوگ بینکوں سے پانچ لاکھ روپے تک کے بلاسود زرعی قرضے حاصل کر سکتے ہیں۔ وہ اپنا کاروبار شروع کرنے کے لیے پانچ لاکھ روپے قرض لے سکتے ہیں اور گھر کی تعمیر کے لیے 20 لاکھ روپے  سے 25 لاکھ روپے تک کا قرض حاصل کیا جا سکتا ہے۔

شوکت ترین نے زور دیا کہ حکومت ایک خاندان کے کم از کم ایک فرد کو فنی تربیت فراہم کرے گی تاکہ وہ اپنے خاندان کے لیے روزی روٹی کما سکے۔انہوں نے کہا کہ اس معاشی ماڈل کا چوتھا پہلو ہیلتھ کارڈ ہے جو لوگوں کو صحت کے اخراجات سے متعلق ان کی پریشانیوں سے نجات دلائے گا۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ جب یہ معاشی پروگرام عوام تک پہنچے گا تو ملک ترقی کرے گا۔ انہوں نے کہا کہ حکومت میرٹ پر یقین رکھتی ہے اور تمام قرضے میرٹ پر فراہم کیے جائیں گے۔

تبصرے بند ہیں.