بنگلہ دیش میں مسافروں سے بھری کشتی میں آگ لگنے سے 37 افراد ہلاک

23

ڈھاکا: بنگلہ دیشی پولیس کے مطابق جنوبی علاقے میں مسافروں سے بھری کشتی میں آگ لگنے کے واقعے میں کم از کم 37 افراد ہلاک ہو گئے۔

 

غیر ملکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق واقعہ صبح سویرے جنوبی بنگلہ دیش کے علاقے جھلوکتھی میں پیش آیا اور واقعے کے وقت کشتی میں تقریباً 500 افراد سوار تھے۔

 

مقامی پولیس کے سربراہ نے بتایا کہ اوبھیجان 10 نامی 3 منزلہ کشتی میں دریا کے درمیان میں آگ لگی اور ہم اب تک 37 لاشیں نکال چکے ہیں تاہم ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ ہے۔ اکثر افراد جھلس کر ہلاک ہوئے جبکہ کچھ افراد آگ سے بچنے کے لیے دریا میں کود گئے اور ڈوبنے کے باعث ہلاک ہوئے۔ 

 

انہوں نے بتایا کہ مسافروں سے بھری کشتی ڈھاکا سے واپس آرہی تھی کہ اس کے انجن روم میں آگ لگ گئی اور اب تک تقریباً 100 زخمیوں کو بریسل کے ہسپتالوں میں بھیجا جا چکا ہے۔ عینی شاہدین کا کہنا تھا کہ آگ لگنے کا واقعہ رات تقریباً 3 بجے پیش آیا اور آگ جلد ہی پھیل گئی۔

 

ایک معمر خاتون نے بتایا کہ ہم گراؤنڈ فلور ڈیک پر سوئے ہوئے تھے اور میرے ساتھ میرا 9 سالہ پوتا بھی تھا جبکہ آگ لگنے کے بعد وہ دریا میں کود گیا، مجھے نہیں معلوم اس کے ساتھ کیا ہوا۔ بنگلہ دیش میں اس قسم کا واقعہ نیا نہیں ہے، رواں سال اگست میں مشرقی بنگلہ دیش میں ایک مسافر کشتی اور مال بردار جہاز میں تصادم کے نتیجے میں 21 افراد ہلاک ہوگئے تھے۔

 

گزشتہ سال جون میں ڈھاکا میں دو مسافر کشتیوں میں تصادم کے نتیجے میں 32 افراد ہلاک ہوئے۔ اسی طرح فروری 2015 میں بھی مسافروں سے بھری کشتی ایک مال بردار جہاز سے ٹکرا گئی تھی جس کے نتیجے میں 78 افراد ہلاک ہوئے۔

 

تبصرے بند ہیں.