او آئی سی اجلاس افغانستان کے لیے اہم ثابت ہو گا، آرمی چیف

30

راولپنڈی: چیف آف آرمی اسٹاف جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ او آئی سی اجلاس افغانستان کے لیے اہم ثابت ہو گا۔

 

پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے حوالے سے بتایا ہے کہ آرمی چیف جنرل قمر جاوید باجوہ نے یہ بات سعودی عرب کے وزیرخارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان سے ملاقات کے دوران بات چیت کرتے ہوئے کہی۔ جنرل قمرجاوید باجوہ سے شہزادہ فیصل بن فرحان کی ہونے والی ملاقات کے دوران افغانستان کی صورتحال اور باہمی دفاعی تعاون پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

 

آرمی چیف نے او آئی سی اجلاس میں شرکت پر سعودی قیادت سے اظہار تشکر کیا اور کہا کہ اجلاس افغانستان کے لیے عالمی کوششیں مربوط بنانے کے لیے ہے۔

 

آئی ایس پی آر کے مطابق آرمی چیف نے کہا کہ پاکستان سعودی عرب کے ساتھ تعلقات کو خاص مقام دیتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ  جنوبی ایشیا میں استحکام کے لیے تنازع کشمیر کا پرامن حل ضروری ہے۔

 

اس سے قبل وزیراعظم عمران خان سے سعودی وزیرخارجہ شہزادہ فیصل بن فرحان السعود نے ملاقات کی۔ ملاقات میں وزیراعظم نے شاہ سلمان بن عبدالعزیزاور ولی عہد محمد بن سلمان کیلئے تہنیتی مبارکباد پیش کی اور افغانستان پر او آئی سی وزرائے خارجہ کا غیرمعمولی اجلاس بلانے کے سعودی اقدام کو سراہا۔

 

وزیراعظم کا کہنا تھاکہ کہ سعودی عرب کی جانب سے افغانستان پر بلایا جانے والا وزرائے خارجہ کا اجلاس انتہائی اہم ہے، پاکستان افغانستان کی مدد کیلئے پاکستان میں قائم امدادی غیر سرکاری تنظیموں کو افغانستان کیلئے کام کرنے کیلئے مکمل تعاون فراہم کرے گا۔

 

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ پاکستان اور سعودی عرب کے دوطرفہ تعلقات انتہائی اہم ہیں۔  سعودی وزیر خارجہ نے وزرائے خارجہ کے اجلاس کی میزبانی پر پاکستان کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ توقع ہے اسلام آباد میں ہونے اجلاس سے افغانستان کی مدد کیلئے عالمی برادری فوری متحرک ہوگی۔

 

تبصرے بند ہیں.