سینیٹ میں ووٹوں کی خرید و فروخت ختم کرنے کیلئے قانون سازی کا فیصلہ

56

اسلام آباد: حکومت نے سینیٹ میں ووٹوں کی خرید و فروخت ختم کرنے کے لئے قانون سازی کا فیصلہ کرلیا۔

 
حکومت نے سینیٹ میں ووٹوں کی خرید و فروخت (ہارس ٹریڈنگ) ختم کرنے کے لئے قانون سازی کا فیصلہ کیا ہے۔ مشیر برائے پارلیمانی امور ڈاکٹر بابر اعوان نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ووٹوں کی خرید و فروخت ختم کرنے کے لئے قانون سازی کی کابینہ سے منظوری لی جائے گی، صدر مملکت نے ریفرنس کے ذریعے سپریم کورٹ سے رائے مانگی تھی، سپریم کورٹ نے اس پر اپنی رائے دی اور حکم جاری کیا کہ ووٹ کے اوپر سے پردا اُٹھایا جا سکتا ہے۔

 
بابر اعوان نے کہا کہ ضرورت پڑنے پر دیکھا جا سکتا ہے کہ ووٹ جس پارٹی کو پڑنا چاہئے تھا اسی کو پڑا ہے یا نہیں، وزارت پارلیمانی امور اور الیکشن کمیشن آپس میں رابطے میں ہیں  اور الیکشن کمیشن سے مشاورت کے ساتھ یہ قانون سازی کرنے جا رہے ہیں۔

 
ان کا مزید کہنا تھا کہ ایک کروڑ کے قریب سمندر پار پاکستانی ہیں، ای وی ایم اور سمندر پار پاکستانیوں کی ووٹنگ کے لیے قانون بن گیا ہے۔ الیکٹرانک ووٹنگ مشین حکومت نے نہیں الیکشن کمیشن نے خریدنی ہے، ای سی پی ای وی ایم کی خریداری کےلیے اشتہار دے۔

 

وزیراعظم کے مشیر پارلیمانی امور نے یہ بھی کہا کہ الیکشن کمیشن اوورسیز پاکستانیوں کو ٹائم لائن دے تاکہ وہ اپنے ووٹ رجسٹر کرا سکیں۔

 

 

 

تبصرے بند ہیں.