ملک میں مہنگائی کا طوفان برپا، دودھ اور گھی سمیت 21 اشیاءکی قیمتوں میں اضافہ

117

لاہور: ملک میں مہنگائی کا طوفان تھمنے میں نہیں آ رہا اور رواں ہفتے گھی، دالیں اور چائے کی پتی سمیت 21 اشیاءکی قیمتوں میں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے جس کے باعث عوام میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔ 
ادارہ شماریات کی جانب سے جاری ہونے والی ہفتہ وار مہنگائی کی رپورٹ کے مطابق رواں ہفتے ملک میں مہنگائی کی شرح میں 0.48 فیصد کمی واقع ہوئی جبکہ مجموعی شرح 18.35 فیصد رہی تاہم کم آمدنی والے طبقے کیلئے یہ شرح 19.12 فیصد رہی، اس کے علاوہ 21 اشیاءکی قیمتوں میں اضافہ اور 11 میں کمی ہوئی جبکہ 19 اشیاءکی قیمتیں مستحکم رہیں۔ 
ادارہ شماریات کی جانب سے جاری کئے گئے اعداد و شمار کے مطابق ایک ہفتے کے دوران گھی 5 روپے 62 پیسے فی کلو مہنگا ہوا جس کے بعد گھی کی اوسط قیمت 396 روپے 66 پیسے فی کلو ہو گئی ہے جبکہ دال چنا 91 پیسے فی کلو مہنگی ہوئی، دال مونگ کی قیمت میں 3 روپے 41 پیسے فی کلو اضافہ ہوا اور دال مسور 4 روپے 77 پیسے مہنگی ہوئی۔ 
اسی طرح حالیہ ہفتے کے دوران 190 گرام چائے کی قیمت میں ایک روپیہ 22 پیسے اضافہ دیکھنے میں آیا جبکہ سردی میں اضافے کیساتھ ہی آگ جلانے والی لکڑی کی قیمت میں بھی اضافہ ریکارڈ کیا گیا اور فی من لکڑی کی قیمت 773 روپے 77 پیسے تک جا پہنچی ہے، اس کے علاوہ دودھ، دہی، مٹن، پلین بریڈ اور چاول بھی مہنگے ہوئے۔
ادارہ شماریات کے مطابق ایک ہفتے میں زندہ مرغی اوسطاً 19 روپے 40 پیسے سستی ہوئی جس کے بعد مرغی کی اوسط قیمت 233 روپے 32 پیسے تک پہنچ گئی ہے جبکہ چینی مزید ایک روپے 42 پیسے کمی کے بعد 92 روپے 34 پیسے فی کلو، آٹے کے 20 کلو والے تھیلے کی قیمت 6 روپے 84 پیسے، ایل پی جی کا گھریلو سلنڈر 60 روپے 21 پیسے اور ٹماٹر کی قیمت میں 19 روپے 53 پیسے فی کلو کمی ریکارڈ کی گئی۔ 

تبصرے بند ہیں.