پیٹرولیم ڈیلرز نے حکومتی مذاکرات کا دعویٰ مسترد کر دیا، ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان

34

اسلام آباد: حکومت نے دعویٰ کیا ہے کہ پیٹرول بحران پر ڈیلرز ایسوسی ایشن سے خفیہ مذاکرات جاری ہیں جلد ہڑتال ختم ہو جائے گی لیکن ایسوسی ایشن نے مذاکرات اور حکومتی رابطوں کی اطلاعات کو مسترد کرتے ہوئے ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے۔

 

پیٹرولیم ڈیلرز کی ہڑتال کے معاملے میں حکومت کی جانب سے ڈیلرز کے کچھ نمائندوں سے خفیہ مذاکرات جاری ہیں جن میں حکومت نے پیٹرولیم ڈیلرز کو معاملات جلد حل کروانے کی یقین دہانی کرائی ہے۔

 

ذرائع کے مطابق پیٹرولیم ڈویژن کے حکام کا کہنا ہے کہ ڈیلرز کے جواب کا انتظار ہے امید ہے ہڑتال جلد ختم ہوجائے گی، پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کے عہدے داروں سے مکمل رابطے میں ہیں، کوشش ہے کہ کچھ دیر میں پیش رفت سامنے آجائے گی، کچھ دیر پہلے بھی نمائندوں سے دوبارہ رابطہ ہوا ہے معاملے میں مثبت پیش رفت ہے۔

 

دوسری جانب پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن نے رابطے اور مذاکرات کی تردید کرتے ہوئے ملک بھر میں ہڑتال جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے اور کہا ہے کہ ہم سے کسی نے رابطہ نہیں کیا۔

 

سیکرٹری اطلاعات پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن نے کہا ہے کہ حکومت کی جانب سے تاحال مذاکرات کے لیے کوئی رابطہ نہیں کیا گیا، حکومت کی زبانی یقین دہانیوں پر مزید بھروسا کرنا ایک مذاق ہوگا، ملک بھر میں پیٹرول پمپس کی بندش مارجن میں اضافے تک جاری رہے گی۔

 

انہوں نے کہا کہ حکومت کی جانب سے سمری ارسال کرنے کا وعدہ 3 نومبر کو کیا گیا تھا، ایسوسی ایشن کی جانب سے 17 نومبر تک کا حکومت کو وقت دیا گیا، حکومت پیٹرول پمپس پر تیل کی فراہمی جاری رکھنے کا جھوٹا دعوی کر رہی ہے، ایسوسی ایشن میں شامل تمام پیٹرول پمپس پر تیل کی بندش ہے۔

 

تبصرے بند ہیں.