مذاکرات ہی مسئلے کا واحد حل تھا، ملک میں خون خرابہ بالکل نہیں چاہتا، وزیراعظم

80

اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) سے مذاکرات ہی مسئلے کا واحد حل تھا، ملک میں خون خرابہ بالکل نہیں چاہتا۔

 

پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کی کور کمیٹی کا اجلاس ہوا، اجلاس کے دوران کالعدم تحریک لبیک پاکستان (ٹی ایل پی) کے دھرنے سمیت اہم امورپر تبادلہ خیال کیا گیا۔ وزیر اعظم نے کور کمیٹی ارکان کو کالعدم تنظیم سے مزاکرات پر اعتماد میں لیا۔

 

وزیراعظم کی صدارت میں اجلاس کے دوران پارٹی کی تنظیم نو کے معاملے پر مشاورت کی گئی اور کی پارٹی رہنماؤں کو عوامی رابطہ مہم شروع کرنے کی ہدایت کر دی۔

 

ذرائع کے مطابق عمران خان نے عوام کیلئے ریلیف پیکیج پر بھی اعتماد میں لیا اور وزیر اعظم نے پارٹی امور پر ارکان سے مشاورت کی، اجلاس میں بلدیاتی انتخابات سے متعلق حکمت عملی پر مشاورت کی گئی۔ لاہور کے حلقہ 133 میں ضمنی انتخاب پر بھی مشاورت کی گئی۔

 

اجلاس کے دوران وزیراعظم نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میں ملک میں خون خرابہ بالکل نہیں چاہتا اور ہمیشہ مسائل کو بات چیت اور مذاکرات سے حل کرنے کی کوشش کی ہے جبکہ کبھی بھی طاقت کے استعمال اور انشار کا حامی نہیں رہا کیونکہ بدامنی کا کسی کو فائدہ نہیں ہو گا۔ حالیہ صورتحال کو خوش اسلوبی سے حل کرنے کی کوشش کی ہے اور مذاکرات ہی مسئلے کا واحد حل تھے۔

 

انہوں نے کہا کہ رحمت اللعالمین اتھارٹی بنائی ہے اور اتھارٹی توہین رسالت کے سدباب کے لیے اقدامات کرے گی جبکہ بلدیاتی انتخابات میں ٹکٹس میرٹ پر دیے جائیں گے اور پارٹی رہنما آج سے ہی بلدیاتی انتخابات کی تیاریاں شروع کریں۔

 

اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات فواد چودھری کا کہنا تھا کہ کور کمیٹی اجلاس میں پنجاب، خیبرپختونخوا بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے بات ہوئی جبکہ عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتیں بڑھنے پر ہمیں تشویش ہےاور تیل کی قیمتوں میں اضافے کو روکا گیا ہے کیونکہ توانائی کے بحران سے نمٹنے کے لیے بڑے فکرمند ہیں۔

 

ان کا کہنا تھا کہ وزیراعظم مہنگائی کے حوالے سے پیکج کا اعلان کرنے جا رہے ہیں اور ایک کروڑسے زائد آبادی کو براہ راست ریلیف ملے گا۔

 

تبصرے بند ہیں.