سعودی عرب کا لبنان کے بارے میں سخت فیصلہ ، درآمدات بھی روک دیں

98

ریاض:سعودی حکومت نےلبنان سے اپنا سفیر بلا لیا جبکہ لبنانی سفیر کو 48 گھنٹے میں ملک چھوڑنے کا حکم دے دیا  ۔سعودی حکام کے حکم کے مطابق لبنان سے تمام درآمدات روک دی گئی ہیں ۔

سعودی حکام کی طرف سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ  لبنانی تنظیم حزب اللہ سعودی عرب میں منشیات اسمگلنگ میں ملوث ہے تاہم لبنانی حکومت نے منشیات کی اسمگلنگ روکنے کے لیے کوئی اہم اقدامات نہیں کیے جس کی بناء پر سعودی حکومت نے لبنان سے درآمدات روک دی ہیں ۔

سعودی حکومت کے اعلان کے مطابق  لبنان سے درآمد روکنے کا فیصلہ سعودی عوام کی حفاظت کے پیش نظر کیا گیا، اس کے علاوہ سعودی حکومت کی جانب سے لبنانی وزیر خارجہ کے بیانات کی بھی شدید مذمت کی گئی ہے اور کہا گیا ہے کہ لبنان کی جانب سے سعودی عرب پر لگائے گئے الزامات بے بنیاد ہیں۔

 حکام کا کہنا ہے کہ نوجوانوں کو منشیات کی لت سے بچانا سعودی حکومت کا اولین فریضہ ہے اور اس کے لئے جو بھی اقدامات اٹھانا پڑے اٹھائے جائیں گے  ۔

دوسری طرف  لبنان کے ایک وزیرکا کہنا ہے کہ  یمن میں جاری خانہ جنگی کی وجہ سعودی جارحیت کو قرار دینے پر لبنان کے خلاف سعودی عرب نے یہ اقدام اُٹھایا ہے تاہم اس سے حقائق تبدیل نہیں ہو سکتے ۔

تبصرے بند ہیں.