گورنر پنجاب کا لاہور کالج برائے خواتین یونیورسٹی کے سابق خزانچی کیخلاف کارروائی کا حکم

135

لاہور: (راشد منظور) عدالت میں جعلی رپورٹ جمع کروانے پر گورنر پنجاب نے لاہور کالج برائے خواتین یونیورسٹی کے سابق خزانچی کے خلاف قانونی کارروائی کے احکامات جاری کر دئیے ہیں۔

تفصیلات کے مطابق عبدالغفار نامی ملازم نے 2015ء میں اپنی بطور خزانچی تعیناتی کو قانونی قرار دلوانے کے لئے لاہور ہائیکورٹ میں رٹ پٹیشن نمبر 2138/2017 دائر کی۔

رٹ پٹیشن کی پیشی کے دوران عدالت عالیہ نے یونیورسٹی انتظامیہ سے تعیناتی کی رپورٹ طلب کی۔ عبدالغفار نے رپورٹ میں جعل سازی کی اور یہ کمنٹس شامل کئے کہ 2015ء میں وزیراعلیٰ پنجاب کی جانب سے ان کی بطور خزانچی تعیناتی کی سمری منظور ہو چکی ہے، جبکہ حقیقت میں 2015ء میں وزیراعلیٰ پنجاب نے ان کی سمری مسترد کر دی تھی۔

عدالت عالیہ میں جعلی رپورٹ جمع کروانے کے معاملے کی انکوائری محکمہ ہائر ایجوکیشن پنجاب نے کی جس میں سابق وائس چانسلر ڈاکٹر فرخندہ منظور اور سابق خزانچی عبدالغفار سے تحقیقات کیں جس میں دونوں کی مبینہ ملی بھگت سے جعل سازی ثابت ہو چکی ہے۔

محکمہ ہائر ایجوکیشن کی انکوائری رپورٹ کی روشنی میں گورنر پنجاب نے لاہور کالج برائے خواتین یونیورسٹی کی انتظامیہ کو احکامات جاری کر دئیے ہیں کہ عبدالغفار کے خلاف یونیورسٹی کے قوانین کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے۔

اس حوالے سے ترجمان لاہور کالج برائے خواتین یونیورسٹی نوید اقبال کا کہنا ہے کہ عبدالغفار کا کیس آئندہ سینڈیکیٹ کے اجلاس میں رکھا جائے گا اور چانسلر کی ہدایات کے مطابق کارروائی عمل میں لائی جائے گی۔

تبصرے بند ہیں.