سی ایس ایس امتحان ، 18 ہزار میں سے صرف 33 امیدوار کامیاب

231

کراچی : سندھ میں گزشتہ 13 سال میں تعلیم کی حالت قابل رحم  ہوگئی۔2020 کے سی ایس ایس کے امتحان میں 18 ہزار سے زائد امیدوار تھے ۔ 33 امیدوار کامیاب ہوئے۔ یہ بات ایوان میں جی ڈی اے کے رکن عارف جتوئی نے اپنے ایک توجہ دلاو نوٹس میں بتائی ۔

 توجہ دلاؤ نوٹس پر انھوں نے کہا کہ حکومت کوسندھیوں کو نائب قاصد بنانے کا شوق ہےجب کوئی اسلام آباد پہنچے اور کوئی جج بنے تویہ سندھ کی ترقی سمجھی جاتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ چیف جسٹس نے کہا ہے کہ سندھ میں حکومت نام کی کوئی چیز ہی نہیں ہے۔اگر یہی حال رہا تو 2021 میں صرف ایک یا دو سندھ سے سی ایس ایس پاس کرینگے۔

صوبائی وزیر اسماعیل راہو نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ کہتے ہیں پیپلز پارٹی کے دور میں تعلیم تباہ ہوئی ہے اعدادوشمار حقائق کے مطابق پیش کریں۔ا بھی جو امیدوار پاس ہوئے۔ سندھ کا تناسب 9 فیصد سے زیادہ ہے۔2004 میں پیپلز پارٹی کی حکومت نہیں تھی۔ عارف جتوئی وزیر تھے۔2004 کے سنہری دور میں سندھ کے صرف 24 امیدوار سی ایس ایس میں پاس ہوئے تھے۔
 

تبصرے بند ہیں.