افغانستان چھوڑنے والا آخری امریکی فوجی

138

واشنگٹن: امریکی محکمہ دفاع کی جانب سے سوشل میڈیا پر ایک تصویر جاری کرتے ہوئے کہا گیا ہے کہ یہ افغانستان چھوڑنے والا ہمارا آخری فوجی تھا۔

امریکی محکمہ دفاع کی جانب سے سماجی رابطوں کی ویب سائٹ ٹویٹر پر جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ اس تصویر میں موجود فوجی میجر جنرل کرس ڈوناہو ہیں جو افغانستان سے واپس جانے والے آخری فوجی ہیں، وہ اس فوٹو میں سی 17 طیارے میں سوار ہو رہے ہیں۔

خیال رہے کہ امریکا نے افغانستان میں گزشتہ 20 سال سے جاری جنگ سے پسپائی اختیار کرتے ہوئے اپنی فوجوں کا انخلا مکمل کر لیا ہے۔

امریکی جنرل کیتھ ایف میکنزی کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ افغانستان کی صورتحال خراب ہونے کے بعد ہم نے اپنی پلاننگ کو تبدیل کر لیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ ہم نے طالبان پر واضح کر دیا تھا کہ اگر انخلا کے عمل میں کسی قسم کی مداخلت کی گئی تو اس کو ہرگز برداشت نہیں کیا جائے گا۔

بی بی سی کے مطابق امریکا کا آخری طیارہ کابل ہوائی اڈے سے روانہ ہوتے ہی طالبان نے فتح کی خوشی میں شدید ہوائی فائرنگ کی جس سے پورا شہر گونج اٹھا۔ طالبان ساری رات شہر کی گلیوں میں گھومتے ہوئے فتح کا جشن مناتے رہے۔

رپورٹ کے مطابق امریکا اور نیٹو نے آپریشن میں 6 ہزار امریکیوں سمیت ایک لاکھ تئیس ہزار شہریوں کا انخلا بھی یقینی بنایا گیا تھا۔ تاہم بہت سے ایسے افغان شہری جو اتحادیوں کیلئے کام کر رہے تھے، انھیں سیکیورٹی صورتحال کے پیش نظر افغانستان چھوڑنے کا موقع نہیں مل سکا۔

تبصرے بند ہیں.