لاہور میں ماں بیٹی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنانے والے دونوں ملزم گرفتار

210

لاہور: لاہور میں زیادتی کا ایک اور شرمناک واقعہ پیش آیا ہے۔ رکشہ ڈرائیور نے ساتھی کیساتھ مل کر خاتون اور اس کی بیٹی کو جنسی زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا، گھناؤنے واقعے میں ملوث دونوں ملزمان کو گرفتار کر لیا گیا۔ آئی جی پنجاب کا کہنا ہے کہ تمام شواہد اکھٹے کر لئے گئے ہیں، ملزمان کو سزا دلوانے میں کوئی کسر اٹھا نہیں رکھی جائے گی۔

تفصیل کے مطابق وہاڑی کی رہائشی خاتون گزشتہ شب اپنی 15 سالہ بیٹی کے ہمراہ لاہور پہنچی، اس نے ٹھوکر نیاز بیگ کے بس سٹینڈ سے صدر کینٹ جانے کیلئے رکشہ کرایا، رکشہ چلتے ہی ڈرائیور کا ساتھی بھی اس کے ساتھ سوار ہو گیا۔

ڈائیور رکشے کو مرکزی شاہراہ سے ہٹا کر چوہنگ کے ویران علاقے میں لے گیا اور دونوں خواتین کو زیادتی کا نشانہ بنا ڈالا۔ پولیس نے اس گھناؤنے واقعے میں ملوث دونوں ملزمان کو گرفتار کر لیا ہے۔

آٸی جی پنجاب انعام غنی کا کہنا ہے درج مقدمہ میں ملزمان کے خلاف گینگ ریپ اور دہشت گردی سمیت دیگر سنگین دفعات شامل کی گئی ہیں۔ افسوس ناک واقعہ میں ملوث ملزمان کو قرار واقعی سزا دلوانے میں پولیس کوئی کسر نہیں اٹھا رکھے گی۔

دوسری جانب پولیس ذراٸع کا کہنا ہے واقعے میں ملوث ملزم عمر کیخلاف اس سے قبل بھی زیادتی کے 2 مقدمات درج ہیں۔ ایک مقدمہ نواب ٹاؤن جبکہ دوسرا تھانہ حویلی اوکاڑہ میں درج ہوا تھا۔ انکشاف ہوا ہے کہ ملزم رواں سال ہی زیادتی کے مقدمے میں جیل سے رہا ہوا تھا۔

پولیس نے دوسرے ملزم منصب کو بھی گرفتار کر لیا ہے۔ انویسٹی گیشن پولیس چوہنگ دونوں ملزمان سے مزید تفتیش کر رہی ہے۔

آئی جی پنجاب نے بتایا کہ گزشتہ شب 15 پر اطلاع ملتے ہی پولیس ٹیمیں جائے وقوعہ پر پہنچیں اور فوری کارروائی عمل میں لائی گئی۔ پنجاب فارنزک سائنس لیبارٹری کی ٹیم نے موقع سے شواہد اکٹھے کئے جبکہ متاثرہ خواتین کا میڈیکل بھی کروایا گیا۔

تبصرے بند ہیں.