لاہور کے بڑے پارکوں میں ویڈیو بنانے پر پابندی کی تجویز

149

 

لاہور: پارکس اینڈ ہارٹی کلچر اتھارٹی (پی ایچ اے) نے لاہور کے پانچ بڑے پارکوں میں ویڈیو بنانے پر پابندی کی تجویز دے دی۔

 

پی ایچ اے کے وائس چیئرمین حافظ ذیشان نے کہا ہے کہ پارکس میں ٹک ٹاکرز اور سوشل میڈیا چینلز پر کام کرنے والوں کو ویڈیو بنانے نہیں دی جائے گی۔

 

انہوں نے بتایا کہ پبلک پارک میں ویڈیو بنانے والوں سے پیسے لیے جانے کی تجویز بھی زیر غور ہے۔ پیسے وصول کرنے کے بعد پی ائچ اے مطلوبہ وقت کیلئے سکیورٹی بھی فراہم کرے گا۔

 

ان کا کہنا تھا کہ پی ایچ اے کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کی میٹنگ میں فیصلے کیے جائیں گے۔

واضح رہے کہ 14 اگست کو لاہور میں مینارِ پاکستان کے گریٹر اقبال پارک میں خاتون ٹک ٹاکر عائشہ اکرم کو دست درازی، ہراسگی اور بدتمیزی کا نشانہ بنانے کا واقعہ پیش آیا تھا۔

یومِ آزادی کے موقع پر خاتون ٹک ٹاکر عائشہ اکرم سے ہوئی دست درازی کا خوفناک واقعہ 3 روز بعد سوشل میڈیا کے ذریعے سامنے آیا۔

سیکڑوں نوجوانوں نے ٹک ٹاکر عائشہ اکرم اور اس کے ساتھیوں کو تشدد کا نشانہ بنایا اور کپڑے پھاڑ دیے جبکہ پولیس واقعے سے بے خبر رہی۔ فوٹیجز سوشل میڈیا پر وائرل ہونے پر پولیس نے 400 افراد کے خلاف مقدمہ درج کر لیا۔

 

تبصرے بند ہیں.