برطانیہ میں 23 سالہ لڑکی اغوا کے بعد قتل

154

لندن : برطانیہ میں 23 سالہ میگھن کو اغوا کے بعد قتل کردیا گیا ۔ پولیس نے مقدمہ درج کرکے تحقیقات کا آغاز کردیا ہے جبکہ ایک مشکوک شخص کو گرفتار بھی کرلیا ہے ۔میگھن کے والدین کا کہنا ہے کہ ہمیں انتہائی عزیز بیٹی سے محروم کردیا گیا ہے ۔

تفصیلا ت کے  مطابق لسسٹر شائر پولیس کا کہنا ہے کہ 23 سالہ میگھن ہفتے کی شام کو لاپتہ ہوئی جس کے بعد اس کی تلاش کا کام شروع کردیا گیا۔پولیس نے جگہ جگہ ناکہ بندی کرکے مختلف علاقوں میں چیکنگ کی لیکن میگھن کا کوئی سراغ نہ مل سکا ۔

اتوار کی صبح  پولیس کو ووڈ ہاؤس ایوز کے علاقے میں 23 سالہ میگھن کی لاش مل گئی ۔

جس کے بعد ورثاء کو اطلاع کردی گئی ۔

 

متاثرہ خاندان کا کہنا ہے کہ ہمیں اپنی انتہائی عزیز بیٹی سے محروم کردیا گیا ہے اور ہم اس غم کو الفاظ میں بیان نہیں کرسکتے ۔

میگھن کے والدین کا کہنا ہے کہ وہ اس سانحہ سے بہت دلبرداشتہ ہیں اور ان کے پاس الفاظ نہیں ہیں کہ وہ اپنا غم بیان کرسکیں

ان کا کہنا تھا کہ میگھن بہت عزت اور والدین سے پیار کرنے والی لڑکی تھی ۔

اس معاملے میں ہمیں جو سپورٹ ملی ہے ہم اس کے شکرگذار ہیں لیکن ہم اس وقت صدمے میں ہیں ہماری پرائیویسی ختم ہوگئی ہے ہماری پرائیویسی کا احترام کیا جانا چاہئے ۔

پولیس نے کول وائل کے علاقے سے  ایک 29 سالہ مشکوک شخص کو گرفتار بھی کرلیا ہے جس سے اغوا زیادتی اور قتل کی دفعات کے تحت تحقیقات کی جارہی ہیں ۔

 

 

پولیس سربراہ کا کہنا ہے کہ ہم مقتولہ کے ورثاء کے غم میں شریک ہیں اور ہماری پوری کوشش ہے کہ جلد از جلد اصل محرکات تک پہنچا جاسکے ۔

دوسری طرف تحقیقاتی ٹیم کے سربراہ نے عوام سے اپیل کی ہے کہ اگر کوئی شہری اس معاملے میں ہماری مدد کرنا چاہے تو وہ ہم سے رابطہ کریں ہم اس کا نام صیغہ راز میں رکھ کر تحقیقات کریں گے

پولیس کا کہنا ہے کہ اس قتل کے سلسلے میں انہیں ایک مخصوص ای میل اور ٹیلی فون نمبر پر بھی اطلاع کی جاسکتی ہے ۔

پولیس نے ایک مشکوک سفید رنگ کی کار کی بھی نشاندہی کی ہے اور اس کے بارے میں بھی چھان بین کی جارہی ہیں جو اس وقوعہ کے وقت دیکھی گئی تھی ۔

 

تبصرے بند ہیں.