نور مقدم کیس کی تفتیش مکمل، ملزم ظاہر جعفر کو جیل بھیج دیا گیا

266

اسلام آباد: نور مقدم قتل کیس کے ملزم ظاہر سے تفتیش کا عمل مکمل ہونے کے بعد اسے جیل بھیج دیا گیا ہے۔ ڈیوٹی جج شائستہ کنڈی نے ملزم کیخلاف یہ حکم صادر کیا۔

گزشتہ روز کیس سماعت کے دوران پولیس نے سخت سکیورٹی میں ملزم ظاہر جعفر کو عدالت میں پیش کرتے ہوئے اس کو جوڈیشل کرنے کی استدعا کرتے ہوئے کہا کہ ملزم سے اب تک کی تفتیش مکمل ہو چکی ہے۔

معزز جج نے اس موقع پر ریمارکس دیئے کہ اب تک کچھ نہیں ہوتا، مکمل تفتیش مکمل ہی ہوتی ہے، پولیس والے تو بادشاہ لوگ ہیں، ضمنی چالان بھی لاتے رہتے ہیں۔

عدالت نے استفسار کیا ملزم ظاہر جعفر کہاں ہے؟ ملزم کے روسٹرم پر آنے کے بعد عدالت نے کہا ماسک اتارو، تمہارا کیا نام ہے ؟ اس پر ملزم خاموش رہا۔

عدالت نے ملزم سے استفسار کیا عدالت کے سامنے کچھ کہنا چاہتے ہو کیا؟ اس پر ملزم نے کہا کہ میرے وکیل بات کریں گے۔

عدالت نے نور مقدم کے والد سے استفسار کیا آپ کون ہیں؟ انہوں نے بتایا میں باپ ہوں، اس بدقسمت بچی کا۔

عدالت نے استفسار کیا کتنے دن ہو گئے ہیں، تفتیشی افسر نے بتایا کہ 12 روز ہو گئے ہیں، اب تک کی تحقیقات مکمل ہو چکی ہیں۔

عدالت نے ملزم کو جوڈیشل کر کے اڈیالہ جیل بھیجنے کا حکم دیتے ہوئے 16 اگست کو دوبارہ عدالت میں پیش کرنے کی ہدایت کردی۔

تبصرے بند ہیں.