ایف بی آر کا نئے مالی سال کے پہلے ماہ میں ہدف سے زائد ریونیو کا حصول

64

اسلام آباد: فیڈرل بور ڈ آف ریونیو نے مالی سال 2021- 22ء کے پہلے ماہ جولائی میں حاصل کردہ محصولات کی ابتدائی تفصیلات جاری کر دی ہیں جس کے مطابق ایف بی آر نے 413 ارب روپے کا نیٹ ریونیو حاصل کیا ہے جو کہ اس عرصہ کے مقر ر کردہ ہدف342 ارب روپے سے71 ارب زائد ہے۔ اس طرح پچھلے سال اس عرصہ کے حاصل کردہ نیٹ ریونیو303ارب روپے کے مقابلے میں36فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے۔

آخری دن کے اختتام تک اور بک ایڈجسٹمنٹ کی مد میں حاصل ہونے والی وصولیوں کے بعدمحصولات کی تعداد میں مزید اضافہ متوقع ہے۔ یہ وصولیاں جولائی کے ماہ میں ہونے والی وصولیوں میں سب سے زیادہ ہیں۔بہترین ریونیو حصول حکومت کی معاشی بحا لی کے سلسلے میں تسلسل سے کی جانے والی کوششوں کا نتیجہ ہیں۔اسی طرح گراس ریونیو پچھلے سال کے317 ارب روپے کے مقابلے میں419 ارب روپے رہا اور32 فیصد اضافہ حاصل ہوا۔ماہ جولائی میں 20ارب روپے کے ریفنڈز جاری کئے گئے جو کہ پچھلے سال اس عرصہ میں15.7ارب روپے تھے۔

ریفنڈز کے اجراء میں 26.6فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے ۔ ریفنڈز کی تیز تر ادائیگی اس بات کا ثبوت ہے کہ ایف بی آر کرونا وبا کی چوتھی لہر کے باعث مختلف صنعتوں کو درپیش لیکویڈیٹی مسائل کو حل کرنے میں کوشاں ہے۔ٹیکس سال 2020 کے لئے انکم ٹیکس گوشوارے داخل کرنے والوں کی تعداد35لاکھ30 ہزار ہو چکی ہےجو کہ ٹیکس سال 2019 میں 20 لاکھ 72 ہزار تھی۔ اس طرح ٹیکس گوشوارے داخل کرنے والوں کی تعداد میں 30فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے۔

ٹیکس گوشوارں کے ساتھ ادا شدہ ٹیکس 51ارب روپے رہا جو کہ پچھلے سال اس عرصہ میں 33ارب روپے تھا۔ اس طرح ٹیکس ادائیگی میں54 فیصد اضافہ حاصل ہوا ہے۔ ایف بی آر کی جاری کردہ تفصیلات کے مطابق 11744 پوائینٹ آف سیل ٹرمینلز ایف بی آر کے رپورٹنگ سسٹم کے ساتھ منسلک ہو چکے ہیں۔پاکستان کسٹمز نے ماہ جولائی میں 67 ارب روپے کی کسٹمز ڈیوٹی حاصل کی جبکہ پچھلے سال 49 ارب کسٹمز ڈیوٹی حاصل ہوئی۔ اس طرح 37 فیصد زائد کسٹمز ڈیوٹی حاصل ہوئی۔جولائی 2021میں 3.6 ارب روپے کی سمگل شدہ اشیاء ضبط کی گئی۔

تبصرے بند ہیں.